نیوزی لینڈ اور انگلینڈ کے دورے منسوخ: وزیراعظم نے حقائق دنیا کے سامنے رکھنے کی ہدایت کردی

بول نیوز  |  Sep 22, 2021

نیوزی لینڈ اور انگلینڈ کی کرکٹ ٹیموں کے دورے منسوخ ہو نے کے معاملے پروزیراعظم عمران خان نے حقائق دنیا کے سامنے رکھنے کی ہدایت کردی ہے۔

تفصیلات کے مطابق وزیراعظم کی ہدایت پر وفاقی وزیر داخلہ شیخ رشید احمد اور وزیر اطلاعات ونشریات فواد چوہدری آج اہم پریس کانفرنس کریں گے۔

ذرائع کے مطابق مشترکہ پریس کانفرنس آج سہ پہر اسلام آباد میں ہوگی ، وزیر داخلہ اور وزیر اطلاعات ونشریات دوروں کی منسوخی سے متعلق حقائق سے پردہ اٹھائیں گے۔

پریس کانفرنس میں کرکٹ ٹیم کی فول پروف سیکیورٹی ،اسٹیڈیم پہنچانے اور واپسی کے محفوظ ترین روٹس کے بارے میں بتایا جائے گا۔

اس کے علاوہ ٹیموں کے ساتھ چلنے والے اسکواڈ، ہیلی کاپٹرز، قیام گاہ کی سیکیورٹی کا بھی حوالہ دیا جائے گا۔

ذرائع کے مطابق دورہ منسوخی کے پس پردہ کیا محرمات ہوسکتے ہیں، اس بارے میں بھی پریس کانفرنس میں بتایا جائے گا۔

پریس کانفرنس میں وزراء پوری دنیا کو بتائیں گے کہ پاکستان کرکٹ سمیت دیگر کھیلوں کے لئے کتنا محفوظ ملک ہے، فیک نیوز یا فیک تھریٹ جیسے عوامل کو بھی عوام کے سامنے رکھا جائے گا۔

اس کے ساتھ ساتھ نیوزی لینڈ اور انگلینڈ ٹیموں کے دورے کی منسوخی میں کیا عالمی سازشیں ہوئیں، یہ سب بھی واضح کیا جائے گا۔

وزیراعظم آج قومی کرکٹ ٹیم سے ملاقات کرینگے

 وزیراعظم عمران خان آج قومی کرکٹ ٹیم سے ملاقات کریں گے۔

 وزیر اعظم عمران خان سے  ملاقات کا مقصد ورلڈ کپ کھیلنے والی ٹیم کی حوصلہ افزائی کرنا ہے، پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی) کے چیئرمین رمیز راجہ بھی وزیر اعظم عمران خان سے ہونے والی ملاقات میں موجود ہوں گے۔

 وزیراعظم قومی کرکٹ ٹیم کے کھلاڑیو ں کواہم ہدایات بھی دیں گے جبکہ ملاقات میں نیوزی لینڈ اور انگلینڈ کرکٹ ٹیموں کی منسوخی سے متعلق بھی گفتگو ہوگی۔

ذرائع کے مطابق ملاقات شام 4 بجے وزیراعظم ہاؤس میں ہوگی۔

ملاقات میں پی سی بی چیئرمین رمیز راجہ نیوزی لینڈ اور برطانیہ کے دورہ پاکستان کی منسوخی کے بعد بورڈ سربراہاں سے ہونے والی بات چیت کے بارے میں  وزیر اعظم کو آگاہ کریں گے۔

ملاقات میں انٹرنیشنل ٹیموں کے پاکستان نہ آنے کے بعد کرکٹ بورڈ کی نئی حمکت عملی کے بارے میں وزیر اعظم کو بتایا جائے گا، رمیز راجہ وزیر اعظم کو بورڈ میں اعلیٰ سطح تبدیلیوں سے بھی آگاہ کریں گے۔

Adsence 300X250
مزید خبریں

Disclaimer: Urduwire.com is only the source of Urdu Meta News (type of Google News) and display news on “as it is” based from leading Urdu news web based sources. If you are a general user or webmaster, and want to know how it works? Read More