انڈیا: کیرلا کی ریاست میں سیلاب، درجنوں افراد ہلاک

بی بی سی اردو  |  Oct 17, 2021

A resident carries a dog amid debris of his damaged house after flash floods caused by heavy rains at Thodupuzha in India's Kerala state, 16 October 2021
Getty Images

انڈیا کی جنوبی علاقوں میں شدید بارشوں کے بعد سیلاب کی وجہ سے 20 سے زیادہ لوگ ہلاک ہوچکے ہیں، اور متعدد دیہات اور قصبوں کے راستے منقطع ہو گئے ہیں۔

ریاست کیرلا میں کوتیام کے ضلع میں متعدد گھر سیلابی ریلوں میں بہہ گئے ہیں اور کئی شہری پھنسے ہوئے ہیں۔

علاقے سے موصول ہونے والی ایک ویڈیو میں دیکھا جا سکتا ہے کہ مسافروں کی ایک بس کو پانی میں ڈوبنے سے بچایا جا رہا ہے۔

یہ بھی پڑھیے

کیا گلیشیئر پر جاسوسی کے گم ہو جانے والے ایٹمی آلات انڈیا میں سیلاب کی وجہ بنے؟

انڈیا میں ’پہاڑ سے لٹکا ہوا گلیشیئر‘ جو ٹوٹ کر ڈیم کو بھی اپنے ساتھ بہا لے گیا

وسطی چین میں شدید بارشیں اور سیلاب، ہزاروں افراد نقل مکانی پر مجبور، 12 ہلاک

انڈیا: گلیشیئر پھٹنے سے ڈیم تباہ، 14 افراد ہلاک 203 لاپتہ

کیرلا میں متعدد روز سے جاری شدید بارش کی وجہ سے انتہائی خطرناک لینڈ سلائڈنگ ہوئی ہے اور انڈین فوج امدادی کارروائیوں میں شریک ہے۔

حکام نے اتوار کے روز بتایا کہ پھنسے ہوئے لوگوں کی مدد کے لیے سامان اور امدادی کارکنان کو ہیلی کاپٹروں کے ذریعے پہنچایا جا رہا ہے۔

https://twitter.com/IAF_MCC/status/1449611848236503045


خبر رساں ادارے پی ٹی آئی کے مطابق ایک واقعے میں چھ لوگوں کی فیملی بشمول ایک 75 سالہ دادی اور تین بچے، اس وقت ہلاک ہوگئی جب ان کا گھر سیلابی ریلے میں بہہ گیا۔

پی ٹی آئی کے مطابق ادوکی ضلع میں بھی مبلے تلے تین بعوں کی لاشیں ملی ہیں اور کم از کم پانچ مزید افراد لاپتہ ہیں۔

کولام کے علاقے میں مچھلیاں پکڑنے کے لیے استعمال ہونے والی کشتیوں کے ذریعے امدادی کام کیا جا رہا ہے۔ متعدد مقامات پر سڑکیں تباہ ہو چکی ہیں اور درخت اکھڑ گئے ہیں۔

اس وقت درجنوں افراد لاپتہ ہیں اور خدشات ظاہر کیے جا رہے ہیں کہ ہلاکتوں کی تعداد میں اضافہ ہوگا۔

A car stuck in muddy waters after flash floods caused by heavy rains at Thodupuzha in India's Kerala state, 16 October 2021
Getty Images

اتوار کے روز مقامی شہریوں نے ریسکیو ٹیموں کی مدد کی اور کیچڑ، پتھر، اور گرے ہوئے درختوں کو ہٹانے کا کام کیا اور متاثرہ علاقوں میں زندہ بچنے والوں کی تلاش جاری ہے۔

ریاست میں مختلف مقامات میں ہنگامی بنیادوں پر پناہ کے لیے مراکز قائم کیے گئے ہیں۔

کیرلا میں شدید بارش کی وجہ سے شیلاب اور لینڈ سلائڈنگ زیادہ نایاب بات نہیں ہے کیونکہ ریاست میں ویٹ لینڈ اور جھیلوں میں کافی کمی دیکھی گئی ہے جو کہ سیلاتبں کو روکنے کے لیے قدرتی بند تھے۔

2018 میں کیرلا میں گذشتہ ایک صدر کے بدترین سیلاب میں 400 افراد ہلاک ہوئے تھے اور کم از کم دس لاکھلوگوں کو نقل مکانی کتنی پڑی تھی۔ اسی سال وفاقی حکومت کے ایک جائزے کے مطابق 44 دریاؤں والی یہ ریاست ملک کی 10 ایسی ریاستوں میں سے تھی جہاں سیلاب کا سب سے زیادہ خطرہ تھا۔

مزید خبریں

Disclaimer: Urduwire.com is only the source of Urdu Meta News (type of Google News) and display news on “as it is” based from leading Urdu news web based sources. If you are a general user or webmaster, and want to know how it works? Read More