جامعہ کراچی میں رینجرزاہلکارکاطالبعلم پر تشدد،انکوائری کاحکم

سماء نیوز  |  May 14, 2022

جامعہ کراچی میں رینجرز سیکیورٹی اہلکار کے طالب علم پرتشدد کرنے کے معاملے پر وزیرجامعات سندھ اسماعیل راہو نے انکوائری کا حکم دے دیا۔

اسماعیل راہو نے سیکریٹری یونیورسٹیز اور وائس چانسلر جامعہ کراچی سے رپورٹ کرلی ہے۔

انھوں نے کہا کہ جامعہ کراچی میں چیکنگ کے نام پر کسی پرتشدد کی اجازت نہیں دی جاسکتی،دہشت گردی کی تازہ لہرکی وجہ سے ہم غیر معمولی صورتحال سے گزر رہے ہیں۔

اسماعیل راہو نے کہا کہ نئےحالات میں سیکیورٹی کو یقینی بنانے کے لیے غیررواجی اقدامات لازم ہوگئے اور ان کو کامیاب بنانے کے لیے یونیورسٹی سے متعلقہ افراد کا ایک دوسرے کے ساتھ تعاون اور اعتماد لازم ہے۔

وزیرجامعات نے یقین دلایا کہ منتظمین،اساتذہ، طلبہ و طالبات اور ملازمین کے نمائندے مشاورت سے مسائل حل کریں۔

واضح رہے کہ حالیہ ہفتے جامعہ کراچی میں رینجرز کی جانب سے طلبہ سے مارپیٹ کرنے کی ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل ہوئی تھی۔ ویڈیو میں طلبہ اور سیکورٹی اہلکاروں کے درمیان تلخ کلامی اور تشدد کو بھی دیکھا گیا تھا۔

جامعہ کراچی میں پچھلے ماہ ہونے والے خودکش دھماکے کے بعد طلبہ کی ذاتی سواریوں کو باہر روک دیا جاتا ہے اور طلبہ کی موٹرسائیکل مرکزی دروازے کے باہر پارک کروائی جانے لگی ہیں۔

مزید خبریں

Disclaimer: Urduwire.com is only the source of Urdu Meta News (type of Google News) and display news on “as it is” based from leading Urdu news web based sources. If you are a general user or webmaster, and want to know how it works? Read More