برکینا فاسو: کپتان نے منتخب حکومت کا تختہ الٹنے والے فوجی سربراہ کو عہدے سے فارغ کر دیا

بی بی سی اردو  |  Oct 01, 2022

افریقہ کے ملک برکینا فاسو میں ایک فوجی کپتان نے ملک کے عسکری سربراہ لیفٹینینٹ کرنل پال ہنری کو عہدے سے ہٹانے کا اعلان کیا ہے۔

کیپٹن ابراہیم ٹریور نے سرکاری ٹی وی پر اعلان کرتے ہوئے کہا کہ فوجی سربراہ دہشتگردی کا مقابلہ کرنے میں ناکام رہے ہیں۔

واضح رہے کہ برکینا فاسو کی فوج کے سربراہ لیفٹینینٹ کرنل پال ہنری نے رواں سال جنوری میں اسی بنیاد پر ایک منتخب حکومت کا تختہ الٹ دیا تھا۔

تاہم ان کی انتظامیہ بھی پرتشدد کارروائیوں پر قابو پانے میں ناکام رہی۔ تازہ ترین واقعے میں 26 ستمبر کو ملک کے شمالی علاقے میں ایک فوجی قافلے پر حملے میں 11 سپاہی ہلاک ہوئے تھے۔

1960 میں آزادی پانے کے بعد سے اب تک برکینا فاسو میں آٹھ بار فوجی بغاوت ہو چکی ہے۔

کیپٹن ابراہیم ٹریورنے اپنے فوجی سربراہ کی حکومت کا تختہ الٹتے ہوئے ملک کی سرحد کو بند کرنے اور تمام سیاسی سرگرمیوں کی معطلی کا بھی اعلان کیا۔

اس سے قبل جمعے کے دن لیفٹینینٹ کرنل پال ہنری نے عوام سے اس وقت پرامن رہنے کی اپیل کی تھی جب ملک کے دارالحکومت میں فائرنگ کی آواز آئی تھی۔

ملک میں بغاوت کی افواہیں پھیلنے پر انھوں نے کہا تھا کہ ’چند سپاہیوں کی وجہ سے افراتفری کی کیفیت ہے‘ تاہم انھوں نے کہا کہ ’صورت حال کو معمول پر لانے کے لیے مزاکرات کیے جا رہے ہیں۔‘

جنوری میں جب لیفٹینینٹ کرنل پال ہنری نے صدر روچ کیبور کی حکومت کا تختہ الٹا تھا تو انھوں نے الزام عائد کیا تھا کہ وہ ملک میں پرتشدد تنظیم سے نمٹنے میں ناکام رہے ہیں۔

برکینا فاسو میں 2015 میں اسلامی شدت پسند تنظیم نے اپنی کارروائیوں کا آغاز کیا تھا جن میں ہزاروں افراد ہلاک ہوئے اور تقریبا 20 لاکھ افراد بے گھر ہو چکے ہیں۔

لیفٹینینٹ کرنل پال ہنری ڈمیبا کون ہیں؟Reutersلیفٹینینٹ کرنل پال ہنری ڈمیبا

ملک کے سرکاری ٹی وی پر چہرہ ڈھانپے ہوئے 20 مسلحہ سپاہی نمودار ہوئے جن کی جانب سے ایک تحریری بیان پڑھتے ہوئے کیپٹن ابراہیم ٹریور نے کہا کہ ’بگڑتی ہوئی صورت حال کی وجہ سے ہم متعدد بار ڈمیبا سے سکیورٹی پر دھیان دینے کے لیے کہا لیکن ان کے اقدامات نے ہمیں یقین دلایا کہ ان کا ارادہ بدل رہا ہے۔ ہم نے آج ان کو ہٹانے کا فیصلہ کیا ہے۔‘

اس اعلان کے بعد ملک میں کرفیو لگا دیا گیا جبکہ لیفٹینینٹ کرنل پال ہنری ڈمیبا کے بارے میں اس وقت تک کوئی معلومات نہیں۔

یہ بھی پڑھیے

پاکستان میں ’خلافت‘ کے نام پر فوجی بغاوت کا منصوبہ کیسے ناکام ہوا

نواز شریف سمیت پاکستان کے وہ سیاستدان جنھیں بغاوت کے مقدمات کا سامنا رہا

کیا جرنیلوں کے کارروباری مفادات سوڈان میں فوجی بغاوت کا باعث بنے؟

واضح رہے کہ دارالحکومت میں صبح سے کچھ دیر پہلے صدارتی محل اور فوجی بریکوں کے قریب گولیوں اور دھماکوں کی آواز گونجی۔

صبح کے وقت عام طور پر مصروف شہر کی سڑکیں بلکل خالی تھیں جب کہ فوجی دستے اہم مقامات پر رکاوٹیں لگائے نظر آئے۔

اس سے پہلے ہی سرکاری ٹی وی پر نشریات بند ہو چکی تھیں۔

امریکہ نے برکینا فاسو میں واقعات پر گہری تشویش کا اظہار کرتے ہوئے اپنے شہریوں کو ملک میں نقل و حرکت محدود کرنے کی ہدایت کی ہے۔

اکنامک کمیونٹی آف ویسٹ افریقن کنٹریز کی تنظیم نے حالیہ پیش رفت کی مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ وہ ’غیر آئینی طریقے سے اقتدار حاصل کرنے کی مخالفت کے عزم کا اعادہ کرتے ہیں۔‘

مزید خبریں

Disclaimer: Urduwire.com is only the source of Urdu Meta News (type of Google News) and display news on “as it is” based from leading Urdu news web based sources. If you are a general user or webmaster, and want to know how it works? Read More