قرض پروگرام کی بحالی: آئی۔ایم۔ایف نے نئی شرائط عائد کردیں

سماء نیوز  |  Oct 24, 2021

پاکستان نے 6 ارب ڈالر کے قرض پروگرام کی بحالی اور ایک ارب ڈالر کی اگلی قسط کے حصول کیلئے کوششیں تیز کردیں۔ آئی ایم ایف نے سرکاری اداروں کے کمرشل بینکوں میں اکاؤنٹس بند کرنے کا مطالبہ کردیا، 17 فیصد جی ایس ٹی لاگو کرنے، اضافی ٹیکس کیلئے پارلیمنٹ میں بل لانے کی بھی تجویز دی گئی ہے۔

انٹرنیشنل مانیٹری فنڈ (آئی ایم ایف) نے 6 ارب ڈالر کے قرض پروگرام کی بحالی اور ایک ارب ڈالر کی اگلی قسط کیلئے پاکستان پر نئی شرائط عائد کردیں۔

دستاویز کے مطابق آئی ایم ایف نے سرکاری اداروں کے کمرشل بینکوں میں اکاؤنٹس بند کرنے کا مطالبہ کردیا جبکہ اسٹیٹ بینک میں سنگل ٹریژری اکاؤنٹ مرتب کرنے پر بھی زور دیا گیا ہے۔

واضح رہے کہ ادارے نے این ایچ اے، او جی ڈی سی ایل، پیٹرولیم ڈویژن اور وزارت دفاع سمیت متعدد اداروں کے کمرشل بینکوں میں ہزاروں کھاتے کھول رکھے ہیں، جن میں اربوں روپے کے فنڈز موجود ہیں۔

آئی ایم ایف نے پاکستان پر کرونا ویکسین، ادویات خریداری اور امدادی رقوم کی ترسیل میں شفافیت لانے کیلئے بھی زور دیا ہے۔

آئی ایم ایف نے پاکستان کو نئے ٹیکس لگانے اور ٹیکس چھوٹ کے خاتمے کیلئے بل لانے کی تجویز دی ہے، حکومت کو جی ایس ٹی اصلاحات کے ذریعے ٹیکس نیٹ بڑھانے کا مشورہ بھی دیا گیا ہے۔

عالمی مالیاتی ادارے نے 17 فیصد اسٹینڈرڈ سیلز ٹیکس وصولی اور قرضوں کے بہتر نظام کیلئے سینٹرل ڈیبٹ مینجمنٹ آفس قائم  کرنے کا مطالبہ کردیا، انکم ٹیکس سلیب کی تعداد میں کمی، ٹیکس کریڈٹ اور الاؤنسز کم کرنے کی شرط بھی رکھ دی۔

پاکستان اور آئی ایم ایف کے درمیان مذاکرات آئندہ ہفتے بھی جاری رہیں گے، ایک ارب ڈالر کی اگلی قسط کیلئے پاکستان بجلی، پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافہ اور سرکاری اداروں کی نجکاری سمیت کئی شرائط مان چکا ہے۔

مزید خبریں

Disclaimer: Urduwire.com is only the source of Urdu Meta News (type of Google News) and display news on “as it is” based from leading Urdu news web based sources. If you are a general user or webmaster, and want to know how it works? Read More