نسلہ ٹاور تعمیر کی منظوری دینے والے افسران کیخلاف تحقیقات میں اہم پیشرفت

بول نیوز  |  Jan 19, 2022

نسلہ ٹاور تعمیر کی منظوری دینے والے افسران کیخلاف تحقیقات میں اہم پیشرفت ہوئی ہے۔

ذرائع کے مطابق تفتیشی ٹیم نے سوک سینٹر ٹھنڈی سڑک پر چھاپہ مار کرتفتیشی ٹیم ڈپٹی ڈائریکٹر اکاؤنٹس واسا وسیم احمد کو ہمراہ لے کر روانہ ہوگئے۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ تفتیشی ٹیم نے ایس پی انویسٹی گیشن الطاف حسین کی سربراہی میں کارروائی کی وسیم احمد سابق ڈائریکٹر لینڈ کے ایم سی کے عہدے پر رہ چکے ہیں۔

ذرائع نے بتایا کہ زیر حراست سابق ڈائریکٹر لینڈ کو جے آئی ٹی کے سامنے پیش کیا جائے گا، نسلہ ٹاور کی تعمیر کے لئے بلڈر کیجانب سے دی گئی درخواست کے کورنگ لیٹر پر وسیم احمد نے دستخط کیے تھے۔

یاد رہے سندھ بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی نے نسلہ ٹاور کیس میں ذمے دار افسران کی فہرست پولیس کی تحقیقاتی ٹیم کے حوالے کر دی۔

ذرائع کے مطابق سابق ڈی جی ایس بی سی اے منظور قادر کاکا سمیت 37 افسران کے نام فہرست میں شامل ہیں جبکہ 22 افسران کے نام بول نیوز  پہلے ہی بتا چکا ہے۔ ڈائریکٹر صفدرعلی مگسی، ڈپٹی ڈائریکٹرسرفرازحسین کا نام شامل ہے۔

اسسٹنٹ ڈائریکٹرماجد مگسی، عبدالسمیع سومرو، طلال احمد مگسی، عامرعلی علوی، محمد عاصم انصاری کے علاوہ اسسٹنٹ ڈائریکٹرز سید عبدالحسیب، رحمت اللہ مغیری، نیازحسین لغاری، سید عمران رضوی، ریحان حسین غوری کے نام بھی فہرست میں شامل ہیں۔

سنئیر بلڈنگ انسپکٹرز ریاض حسین خشک، کاشف نظیر، عبدالعاصم خان، فہد رضا بھمبھرو، عامر علی عباسی، محمد عامر قریشی، محمد آصف شیخ، عامرحسین، شفیع محمد مگسی، محمد جہانگیر، الطاف حسین سومرو بھی ذمہ دار قرارہیں۔

فہرست میں شاہد محمود، عارف شجاع، محمد ندیم آرائیں اور سید عامر حسین کے علاوہ بلڈنگ انسپکٹر محمد مٹھل لاکھیر، ساجد حسین بھٹی، عمیرخان دایو، آغا شیراز احمد، لئیق احمد بھٹو، اسداللہ چانڈیو، خالد حسین سومرو، ایسرعلی چندانی، حسین علی چانڈیو کے نام بھی شامل ہیں۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ جمشید ٹاؤن میں 2013 میں یہ تمام افسران تعینات تھے۔ نسلہ ٹاور کی این او سی ان ہی افسران کے دورمیں جاری ہوئی۔ پولیس کو فراہم کردہ فہرست میں ڈیزائن سیکشن، اسٹرکچر اور ماسٹر پلان کے افسران کے نام شامل نہیں کیے گئے۔

ذرائع نسلہ ٹاوررہائشی پلاٹ تھا بعد میں کمرشل کیا گیا۔ اس کی سائیڈ انسپکشن بھی ہوئی۔ ڈی جی ایس بی سی اے منظورکاکا نے خود کیس سنا اور نقشے کی پرمیشن دی۔ انویسٹیگیشن پولیس نے ایس بی سی اے سے سابق ڈی جی منظورکاکا سمیت 37 افسران کی تفصیلات طلب کرلی ہیں۔

پولیس کی تحقیقات ٹیم کا مطالبہ ہے کہ تمام افسران کے شناختی کارڈز کی کاپیاں دی جائیں تا کہ ان کے ایڈریس معلوم ہوں۔ مذکورہ افسران کے موبائل نمبربھی دیے جائیں۔

Square Adsence 300X250
مزید خبریں

Disclaimer: Urduwire.com is only the source of Urdu Meta News (type of Google News) and display news on “as it is” based from leading Urdu news web based sources. If you are a general user or webmaster, and want to know how it works? Read More