کابل میں پاکستانی ناظم الامور پر حملہ، سکیورٹی گارڈ زخمی

اردو نیوز  |  Dec 02, 2022

افغانستان کے دالحکومت کابل میں پاکستانی ناظم الامور پر حملے میں پاکستانی سفارت خانے کا ایک سکیورٹی گارڈ زخمی ہو گیا ہے۔

دفتر خارجہ کے مطابق ’جمعے کو پاکستانی سفارت خانے کے کمپاؤنڈ پر حملہ کیا گیا جس کا نشانہ پاکستانی ناظم الامور عبید الرحمان نظامانی تھے، جو محفوظ رہے۔‘

وزیراعظم شہباز شریف نے حملے کی شدید مذمت کرتے ہوئے اس کی فوری تحقیقات اور ذمہ داروں کے خلاف کارروائی کا مطالبہ کیا ہے۔

ایک ٹویٹ میں وزیراعظم نے کہا کہ ’میں کابل میں پاکستانی ناظم الامور پر بزدلانہ حملے کی کوشش کی شدید مذمت کرتا ہوں۔ میں اس بہادر سکیورٹی گارڈ کو سلام پیش کرتا ہوں جس نے ان (ناظم الامور) کی جان بچانے کے لیے خود گولی کھا لی۔‘

انہوں نے مزید کہا کہ ’میں سکیورٹی گارڈ کی جلد صحت یابی کے لیے دعا گو ہوں اور اس گھناؤنے فعل کی فوری تحقیقات اور ذمہ داروں کے خلاف کارروائی کا مطالبہ کرتا ہوں۔‘

واضح رہے کہ پاکستان کے دفتر خارجہ کی جانب سے جاری ہونے والے بیان کے مطابق ’جمعے کو کابل میں پاکستانی سفارت خانے کے کمپاؤنڈ پر حملہ کیا گیا۔ حملے کا نشانہ پاکستانی ناظم الامور عبید الرحمن نظامانی تھے، جو محفوظ رہے۔ تاہم ایک پاکستانی سکیورٹی گارڈ سپاہی اسرار محمد مشن کے سربراہ کی حفاظت کرتے ہوئے اس حملے میں شدید زخمی ہوئے ہیں۔‘

ایک اور ٹویٹ میں وزیراعظم نے کہا کہ ’ان کی کابل میں پاکستانی مشن کے ناظم الامور عبید نظامانی سے بات ہوئی ہے۔ یہ سن کر اطیمنان ہوا کہ وہ محفوظ ہیں۔ میں نے ان سے حکومت اور عوام کی جانب سے یکجہتی کا اظہار کیا، جبکہ انہیں اور مشن کو مکمل تعاون اور مدد کا یقین دلایا۔ میں نے بہادر سکیورٹی گارڈ کی جلد صحت یابی کے لیے دعا بھی کی۔‘

دفتر خارجہ کے مطابق حکومت پاکستان پاکستانی ناظم الامور پر قاتلانہ حملے اور کابل میں سفارت خانے کے کمپاؤنڈ پر حملے کی شدید مذمت کرتی ہے۔ 

بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ ’افغانستان کی عبوری حکومت فوری طور پر اس حملے کی مکمل تحقیقات کرے، مجرموں کو پکڑے، ان کا محاسبہ کرے اور افغانستان میں پاکستانی سفارتی عملے اور شہریوں کے تحفظ کو یقینی بنانے کے لیے فوری اقدامات کرے۔‘

پاکستانی ناظم الامور عبید الرحمن نظامانی حملے میں محفوظ رہے ہیں۔ (فوٹو: پاکستانی سفارتخانہ کابل)خیال رہے کہ ماضی میں بھی افغانستان میں پاکستانی سفارت کاروں کو نشانہ بنایا جاتا رہا ہے۔ 

نومبر 2017 میں ایک پاکستانی سفارت کار نیئر اقبال رانا کو مشرقی افغانستان کے شہر میں ان کی رہائش گاہ کے قریب نامعلوم مسلح افراد نے گولی مار کر ہلاک کر دیا تھا۔

مزید خبریں

Disclaimer: Urduwire.com is only the source of Urdu Meta News (type of Google News) and display news on “as it is” based from leading Urdu news web based sources. If you are a general user or webmaster, and want to know how it works? Read More