جنسی زیادتی پر مبنی مختصر فلم ‘بیلو’جاری

سماء نیوز  |  Sep 16, 2020

پاکستانی معاشرے میں جنسی زیادتی کے حقیقی واقعہ پر مبنی مختصر فلم ’بیلو- دی کلیڈوسکوپ ‘جاری کردی گئی ۔

اس مختصر فلم کی کہانی ایک خاتون پر مبنی جو پوسٹ ٹرامیٹک اسٹریس ڈس آرڈر کا شکار ہے، جسے 10 برس کی عمر میں جنسی زیادتی کا نشانہ بنایا جاتا ہے اور اس کی ویڈیو بنا کر انٹرنیٹ پر وائرل کردی جاتی ہے جس کے بعد وہ بڑی عمر تک ذہنی دباؤ کا شکار رہتی ہے ۔ فلم بیلو کے رائٹر اور ہدایتکار دانیال افضال نے سماء ڈیجیٹل کو بتایا کہ پاکستان میں عورت کو ہمیشہ خاموش کروادیا جاتا ہے تاہم اب لوگوں نے ان مسائل پر آواز اٹھانی شروع کردی ہے ۔ گزشتہ دنوں ملک بھر میں بچوں اور خواتین کے ساتھ ہونے والی جنسی زیادتی کے انتہائی المناک واقعات کے خلاف شوبز اسٹارز سمیت ہر طبقے سے تعلق رکھنے والوں نے احتجاج کیا۔

#SAYNOTORAPE #saynotosexualabuse 𝐓𝐑𝐈𝐆𝐆𝐄𝐑 𝐖𝐀𝐑𝐍𝐈𝐍𝐆: 𝚃𝚑𝚒𝚜 𝚏𝚒𝚕𝚖 𝚌𝚘𝚗𝚝𝚊𝚒𝚗𝚜 𝚒𝚗𝚏𝚘𝚛𝚖𝚊𝚝𝚒𝚘𝚗 𝚠𝚑𝚒𝚌𝚑 𝚖𝚊𝚢 𝚋𝚎 𝚝𝚛𝚒𝚐𝚐𝚎𝚛𝚒𝚗𝚐 𝚝𝚘 𝚜𝚞𝚛𝚟𝚒𝚟𝚘𝚛𝚜. 𝐒𝐲𝐧𝐨𝐩𝐬𝐢𝐬 “𝐇𝐞𝐫 𝐝𝐚𝐮𝐠𝐡𝐭𝐞𝐫 𝐰𝐚𝐬 𝐫*** 𝐚𝐧𝐝 𝐫𝐞𝐜𝐨𝐫𝐝𝐞𝐝. 𝐒𝐮𝐜𝐡 𝐚 𝐝𝐢𝐬𝐠𝐫𝐚𝐜𝐞 𝐭𝐨 𝐨𝐮𝐫 𝐧𝐞𝐢𝐠𝐡𝐛𝐨𝐫𝐡𝐨𝐨𝐝, 𝐰𝐡𝐚𝐭 𝐚 𝐬𝐡𝐚𝐦𝐞!” 𝐖𝐡𝐢𝐬𝐩𝐞𝐫𝐬 𝐚𝐧𝐝 𝐫𝐮𝐦𝐨𝐫𝐬 𝐨𝐯𝐞𝐫𝐰𝐡𝐞𝐥𝐦 𝐚 𝐧𝐞𝐢𝐠𝐡𝐛𝐨𝐫𝐡𝐨𝐨𝐝 𝐚𝐟𝐭𝐞𝐫 𝐉𝐚𝐦𝐢𝐥𝐚'𝐬 𝟏𝟎-𝐲𝐞𝐚𝐫-𝐨𝐥𝐝 𝐝𝐚𝐮𝐠𝐡𝐭𝐞𝐫'𝐬 𝐯𝐢𝐝𝐞𝐨 𝐠𝐨𝐞𝐬 𝐯𝐢𝐫𝐚𝐥. 𝐓𝐡𝐢𝐬 𝟗-𝐦𝐢𝐧 𝐬𝐡𝐨𝐫𝐭 𝐟𝐢𝐥𝐦: 𝐁𝐥𝐮𝐞 𝚒𝚜 𝚋𝚊𝚜𝚎𝚍 𝚘𝚗 𝚊 @bbcurdu 𝚛𝚎𝚙𝚘𝚛𝚝 𝚋𝚢 𝙰𝚖𝚋𝚎𝚛 𝚂𝚑𝚊𝚖𝚜𝚒, "𝐇𝐨𝐰 𝐫*** 𝐰𝐚𝐬 𝐟𝐢𝐥𝐦𝐞𝐝 𝐚𝐧𝐝 𝐬𝐡𝐚𝐫𝐞𝐝 𝐢𝐧 𝐏𝐚𝐤𝐢𝐬𝐭𝐚𝐧" https://www.bbc.com/news/world-asia-31313551 𝚃𝚑𝚎 𝚏𝚒𝚕𝚖 𝚠𝚊𝚜 𝚛𝚎𝚌𝚘𝚖𝚖𝚎𝚗𝚍𝚎𝚍 𝚋𝚢 𝚝𝚑𝚎 𝚙𝚛𝚘𝚐𝚛𝚊𝚖𝚖𝚎𝚛 𝚊𝚝 @tribeca 𝚊𝚕𝚘𝚗𝚐 𝚠𝚒𝚝𝚑 𝚘𝚏𝚏𝚒𝚌𝚒𝚊𝚕 𝚜𝚌𝚛𝚎𝚎𝚗𝚒𝚗𝚐𝚜 𝚊𝚝 @ifva_hk 𝚊𝚗𝚍 @wow.pakistan

A post shared by Arash Visuals Inc. (@arashvisualsinc) on Sep 5, 2020 at 5:30am PDT

دانیال نے کہا کہ ہمارے معاشرے میں اگر کسی کے ساتھ ایسا ظلم ہو تو لوگ اسے سننا پسند نہیں کرتے اور ایسا ہی اس فلم میں دکھایا گیا ہے ۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ یہ فلم ان تمام خواتین کے لئے ہے جن کے ساتھ عصمت دری کا شکار ہونے کی وجہ سے ان کے ساتھ ناروا سلوک کیا گیا۔

یہ 9 منٹ کی مختصر فلم بی بی سی کی ایک رپوٹ پر مبنی ہے ۔ فلم بیلو رواں برس کے آغاز میں تیار ہوگئی تھی تاہم لاک ڈاؤن کے باعث تاخیر کا شکار ہوئی ،اس فلم کی ٹریبیکا فلم فیسٹیول، ہانگ کانگ کے فلم فیسٹیول ایفوااور ویمن آف دی ورلڈ فیسٹیول میں بھی اسکرینگ کی جاچکی ہے ۔

View this post on Instagram 𝐏𝐫𝐨𝐠𝐫𝐚𝐦𝐦𝐞𝐫 𝚊𝚝 𝚊𝚗 𝐎𝐬𝐜𝐚𝐫-𝐐𝐮𝐚𝐥𝐢𝐟𝐲𝐢𝐧𝐠 𝙵𝚒𝚕𝚖 𝙵𝚎𝚜𝚝𝚒𝚟𝚊𝚕 [𝐓𝐫𝐢𝐛𝐞𝐜𝐚] 𝚘𝚗 𝚘𝚞𝚛 𝚜𝚑𝚘𝚛𝚝 𝚏𝚒𝚕𝚖 [𝐁𝐥𝐮𝐞] @tribeca 🙌🍻 – 𝙽𝚘𝚠 𝚝𝚑𝚊𝚝 𝚒𝚜 𝚜𝚘𝚖𝚎 𝐔𝐍𝐁𝐄𝐋𝐈𝐄𝐕𝐀𝐁𝐋𝐄 𝚏𝚎𝚎𝚕𝚣𝚣𝚣 🙏 #oscars #oscar #oscarwilde #actor #oscarwinner #oscars2016 #oscar2017 #hollywood #oscar2016 #redcarpet #oscarisaac #art #instagood #oscarniemeyer #oscarselfie #oscarthegrouch #oscardelarenta #oscardleon #actors #legend #love #oscarin #oscarito #oscarasdomomento #theoscars #oscaras #theacademyawards #oscarfreire #óscar #starwarsedits

A post shared by Arash Visuals Inc. (@arashvisualsinc) on Aug 5, 2020 at 12:34pm PDT

سال 2016 میں دانیال افضال کی مختصر ڈاکومنٹری فلم “دی سروائورز” نے بھی کئی اعزاز حاصل کیے تھے۔ یاد رہے کہ کچھ روز قبل پی آئی بی کالونی سے پانچ سالہ مروا نامی بچی کو اغوا کرکے جنسی زیادتی کا نشانہ بنایا گیا تھا جس کے بعد بچی کو قتل کردیا گیا تھا۔

دوسرا المناک واقعہ لاہور کے قریب گجرپورہ لنک روڈ پر پیش آیا جہاں خاتون کو گاڑی سے اتار کر اجتماعی زیادتی کا نشانہ بنایا گیا تھا۔

مزید خبریں

Disclaimer: Urduwire.com is only the source of Urdu Meta News (type of Google News) and display news on “as it is” based from leading Urdu news web based sources. If you are a general user or webmaster, and want to know how it works? Read More