وزیرستان سمیت پسماندہ علاقوں کی ترقی میرا فلسفہ ہے،وزیراعظم

روزنامہ اوصاف  |  Jan 20, 2021

اسلام آباد(روزنامہ اوصاف)وزیراعظم عمران خان نے جنوبی وزیرستان میں تھری جی اور فورجی کا افتتاح کردیا جبکہ ان کا کہنا تھا کہ بھارت میں انتہا پسند حکومت ہےجو پاکستان میں انتشار پھیلانے کیلئے کوششیں کررہی ہے ،انٹرنیٹ سروس تھری جی اور فور جی کی فراہمی میں سکیورٹی ایشو بڑی رکاوٹ تھا ، آج انٹرنیٹ تھری جی اور فورجی سروس یہاں کھل جائےگی،وزیرستان سمیت پسماندہ علاقوں کی ترقی میری حکومت کا فلسفہ ہے ،نوجوانوں کو اعلیٰ تعلیم دینا ،صحت اور کاروبار کی سہولیات دینا ہماری اولین ترجیح ہے ،کامیاب نوجوان پروگرام اس کا واضح ثبوت ہے ۔ای پاسپورٹ سے انسانی سمگلنگ روکنے میں بڑی مدد ملے گی،شیخ رشید وانا میں کامیاب نوجوان پروگرام اور انٹرنیٹ سروس کی افتتاحی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم نے کہا کہ وزیرستان کے لوگوں کو ایک پیغام دینا چاہتا ہوں کہ میرا فلسفہ حکومت یہ ہے کہ جو لوگ اور علاقے پیچھے رہ گئے ہیں ان کو ترقی یافتہ علاقوں کے برابر لانا ہے اور پسماندہ علاقوں کی ترقی میری حکومت کی پالیسی ہے ، ہماری پوری کوشش ہے کہ پاکستان کے غریب طبقے کو اوپر اٹھانے پر پورا زور لگانا ہے ، اس طبقے کی تعلیم پر توجہ دینی ہے اس کے لئے ہم سکولز، کالجز اور یونیورسٹیز کھولیں گے ۔انہوں نے کہاکہ میں میانوالی میں نمل یونیورسٹی کھولی جہاں وانا سے بھی طالب علم جا کر علم حاصل کرتے ہیں ۔انہوں نے کہاکہ اگر ہم ایک نوجوان کو اچھی تعلیم دیدیں تو وہ اپنے خاندان پھر اپنے علاقے اور پھر اپنے ملک کو اوپر لے جائے گا ۔انہوں نے کہاکہ پچھلے پندرہ سالوں میں سب سے زیادہ تباہی وزیرستان میں ہوئی جہاں دہشت گردی کیخلاف جنگ لڑی گئی اس لئے میری ترجیح ہے کہ ان علاقوں کو اپ ڈیٹ کیا جائے ، یہاں لوگوں کو پیکیج دیں اور نوجوانوں کو تعلیم فراہم کریں۔انہوں نے کہاکہ قبائلی علاقوں میں سب سے زیادہ تباہی وزیرستان میں مچی تھی اور ہماری پوری کوشش ہے کہ ہم سب سے زیادہ آپ کی مدد کریں گے ۔انہوں نے کہاکہ یہ کامیاب نوجوان پروگرام جو شروع کیا ہے اس کو مزید بڑھایا جائے گا اور یہاں کے نوجوانوں کو کاروبار کے لئے سب سے زیادہ قرضے دیئے جائیں گے۔انہوں نے کہاکہ انگزیز دور میں قبائلی لوگوں نے انگریز کیخلاف سب سے زیادہ جنگ لڑی اور یہاں بہت مسلمان شہید ہوئے ۔انہوں نے کہاکہ جب ہندوستان نے 47 میں مسلمانوں پر ظلم کیا اور کشمیر پر ظلم کے پہاڑ ڈھائے تو قبائلی اٹھ کھڑے ہوئے اور کشمیر میں اپنے مسلمان بھائیوں کیساتھ ملکر لڑے اور یہ ایک تاریخ ہے جو میں نے بھی پڑھی ہے ۔وزیراعظم نے کہا کہ مجھے پوری طرح اندازہ ہے جب 1965 کی جنگ ہوئی تو قبائلی علاقوں سے بڑی تعداد میں ملک و قوم کے دفاع کیلئے لڑے ۔انہوں نے کہا کہ قبائلی علاقوں کا خیبرپختونخوا میں ضم ہونا بہت مشکل کام تھا تاہم اس کے باوجود انتشار پھیلنے کی بڑی کوشش کی کہ یہ علاقے ضم نہ ہوں مگر مجھے خوشی ہے کہ قبائلیوں نے ہمارا ساتھ دیا اور ان علاقوں کو ضم کرنے میں ہمارے ساتھ تعاون کیا ۔انہوں نے کہاکہ یہ وقت ثابت کرے گا کہ ضم علاقوں سے متعلق حکومت کا فیصلہ بہترین فیصلہ تھا ۔وزیراعظم عمران خان نے کہاکہ میں نے خیبرپختونخوا کے لوگوں کے جو مطالبات سنے ہیں وہ جائز ہیں اور اس حوالے سے وزیراعلی آپ لوگوں سے مشاورت کریں گے اور جلدی کے فیصلے سے کہیں مزید مشکلات نہ کھڑی ہو جائیں ۔انہوں نے کہاکہ یہاں سے ٹانک جانا بہت مشکل ہے اور ہم ایسی پالیسی لائیں گے وانا کے اندر ہی آپ لوگوں کے مسائل حل ہوں گے ۔انہوں نے کہاکہ آج انٹرنیٹ تھری جی اور فورجی سروس یہاں کھل جائے گا ۔مجھے پتہ ہے کہ یہ انٹرنیٹ کی نوجوانوں کی بڑی ڈیمانڈ تھی جو آج پوری ہورہی ہے ۔انہوں نے کہاکہ اس پراجیکٹ پر پہلے سے کام مکمل ہو چکا تھا ۔تاہم سکیورٹی ایشوز تھا کیونکہ ہمارا دشمن پوری کوشش کررہا ہے کہ پاکستان میں انتشار پھیلے اور ہمارا پڑوسی ملک پاکستان میں دہشت گردی کی کارروائیوں میں ملوث ہے ،بھارت دہشت گردی پھیلا رہا ہے ، بلوچستان میں دہشت گردی کی کارروائیوں میں ملوث ہے ،یہ سروس دہشت گرد بھی استعمال کرسکتے تھے اور اس حوالے سے میں نے ڈی جی آئی ایس آئی سے بات کی جنہوں نے ہمارا سکیورٹی مسئلہ حل کردیا اوراب یہاں تھری جی اور فوری جی آج سے چالو ہو جائے گی ۔ہم یہاں بھی تمام ڈیجیٹل سہولیات شہریوں کو فراہم کرنے کیلئے کوشاں ہیں۔انہوں نے کہا کہ ہم نےغربت کے خاتمے کے لئے احساس پروگرا م شروع کیا ہے اور غربت کی لکیر سے نیچے لوگوں کو پیسے بھی دینگے ، مویشی بھی دینگے ، سکالر شپس بھی دینگے ،تعلیم میں بھی مدد کرینگے۔قبل ازیں وزیراعظم کے معاون خصوصی عثمان ڈار نے کہا ہے کہ کامیاب جوان پروگرام کے تحت قبائلی اضلاع 1.2ارب روپے تقسیم کیے جائیں گے عثمان ڈار نے کہا کہ غربت ختم کرنے کا بہترین ذریعہ نوجوانوں کو کاروبار کی فراہمی ہے، قبائلی اضلاع میں نوجوانوں کو قرضوں کی فراہمی سے ترقی کی راہ ہموار ہوگی، عثمان ڈارنے کہا کہ 5ارب روپے سے زائد کی رقم نوجوانوں میں تقسیم کرچکےہیں۔
مزید خبریں

Disclaimer: Urduwire.com is only the source of Urdu Meta News (type of Google News) and display news on “as it is” based from leading Urdu news web based sources. If you are a general user or webmaster, and want to know how it works? Read More