سیاسی جماعتوں پر پابندی درست نہیں، مصدق ملک

سماء نیوز  |  Apr 14, 2021

پاکستان مسلم لیگ نون کے رہنماء مصدق ملک کا کہنا ہے کہ کسی بھی سیاسی جماعت پر پابندی لگانا درست نہیں تاہم جو لوگ  قانون ہاتھ میں لے رہے ہیں ان کے ساتھ سختی سے نمٹنا چاہئے۔

سماء کے پروگرام ندیم ملک لائیو میں گفتگو کرتے ہوئے مصدق ملک نے کہا کہ جب جب سیاسی جماعتوں کو کالعدم قرار دیا گیا وہ نئے ناموں سے واپس آگئیں۔

مصدق ملک کا مزید کہنا تھا کہ اگر تحریک لبیک پاکستان ایک دہشت گرد جماعت ہے تو پھر اس کے ساتھ معاہدے کیوں کئے گئے تاہم انہوں نے کہا کہ یہ حق کسی کو حاصل نہیں کہ وہ لوگوں کے جان و مال کو نقصان پہنچائیں۔

رہنماء ن لیگ نے الزم عائد کیا کہ تحریک انصاف کے دھرنے کے دوران صدارتی نافرمانی کا کہا گیا جبکہ پولیس پر تشدد کرنے کے علاوہ شہروں کو بھی لاک ڈاؤن کیا گیا۔

مصدق ملک نے کہا کہ اس وقت اگر تحریک انصاف پر پابندی لگتی تو وہ مسئلے کا حل نہیں تھا، کیوں کہ ایسا کسی بھی سیاسی جماعت کے ساتھ نہیں کیا جانا چاہئے۔

انہوں نے حکومت پر زور دیا کہ وہ عوام کے جان و مال کی حفاظت کرے اور یہ حق کسی کو نہ دے کہ وہ سڑک پر نکل کر ملک ٹیک اوور کرلے۔

مصدق ملک نے مزید کہا کہ جب آپ اداروں کو متنازع بنائیں گے تو وہ کام نہیں کرسکیں گے اور اگر ہم اداروں کے سربراہان کے نام لے کر دھمکیاں دیں گے تو ادارے کیسے کام کریں گے۔

پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے پیپلزپارٹی کے رہنماء آغا رفیع اللہ نے کہا کہ 3 دن سے ملک میں لاقانونیت کا بازار گرم تھا، بہتر طریقہ یہ ہوتا کہ جو لوگ تشدد میں ملوث تھے ان کیخلاف کارروائی کرتے لیکن تحریک لبیک پاکستان پر پابندی کا فیصلہ جلد بازی میں کیا گیا ہے۔

آغار فیع اللہ کا مزید کہنا تھا کہ کسی خالص سیاسی جماعت پر پابندی نہیں ہونی چاہئے لیکن یہاں حکومت نے عوام کو 3 روز جتھوں کے رحم کرم پر چھوڑا اور اب یہ فیصلہ کیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ تحریک لبیک پاکستان کے سربراہ سعد رضوی کو گرفتار کرنے سے پہلے تیاری کرنی چاہئے تھی لیکن کسی منصوبہ بندی کے بغیر کام کیا گیا جس کے باعث بھگتنا عوام کو پڑا۔

رہنماء تحریک انصاف عثمان ڈار نے پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ کسی کو کسی کے ایمان اور عشق کا فیصلہ نہیں کرنا چاہئے، عمران خان نے اقوام عالم میں توہین رسالتؐ کا معاملہ اٹھایا ہے۔

عثمان ڈار کا کہنا تھا کہ 3 دن سے لوگ اذیت سے گزر رہے ہیں اور ہمیں اس وقت متفق ہوکر فیصلے کرنے کی ضرورت ہے۔ انہوں نے کہا کہ ماضی میں ن لیگ نے بھی تو سپریم کورٹ پر حملہ کیا تھا۔

مزید خبریں

Disclaimer: Urduwire.com is only the source of Urdu Meta News (type of Google News) and display news on “as it is” based from leading Urdu news web based sources. If you are a general user or webmaster, and want to know how it works? Read More