لاہور ہائی کورٹ کے ریفری بینچ نے شہباز شریف کی درخواست ضمانت منظور کر لی

وائس آف امریکہ اردو  |  Apr 22, 2021

لاہور — 

لاہور ہائی کورٹ نے آمدن سے زائد اثاثہ جات کیس میں قومی اسمبلی میں قائدِ حزب اختلاف شہباز شریف کی درخواست ضمانت متفقہ طور پر منظور کر لی ہے۔ عدالت نے اپنے مختصر فیصلے میں شہباز شریف کو 50، 50 لاکھ روپے کے دو ضمانتی مچلکے جمع کرانے کا حکم دیا ہے۔

جمعرات کو عدالتِ عالیہ لاہور کے جسٹس علی باقر نجفی کی سربراہی میں تین رکنی بینچ نے شہباز شریف کی درخواست ضمانت پر سماعت کی۔ بینچ میں جسٹس عالیہ نیلم اور جسٹس سید شہباز رضوی بھی شامل تھے۔

سماعت شروع ہوئی تو نیب کے اسپیشل پراسیکیوٹر سید فیصل رضا بخاری نے عدالت کو بتایا کہ درخواست گزار کے وکیل کا تین سے چار دن تک فیصلہ جاری نہ کرنے کا بیان دینا توہین آمیز تھا۔

شہباز شریف کے وکیل اعظم نذیر تارڑ نے کہا کہ وہ اپنی بات پر قائم ہیں کیوں کہ یہ حقیقت تھی کہ تین سے چار دن تک فیصلہ جاری نہیں ہوا۔

جسٹس علی باقر نجفی نے اِس موقع پر کہا کہ اُنہوں نے کل کہا تھا کہ ہم ججز تبھی فیصلے پر دستخط کرتے ہیں جب ہم پوری طرح مطمئن ہوتے ہیں۔ جسٹس علی باقر نجفی نے نیب پراسیکیوٹر سے کہا کہ آپ کا نکتہ نوٹ کر لیا گیا ہے۔ آپ دلائل دیں۔

خیال رہے کہ اس سے قبل رواں ماہ 14 اپریل کو ہائی کورٹ کے دو رکنی بینچ میں شامل جسٹس سردار محمد سرفراز ڈوگر نے شہباز شریف کی ضمانت منظور کی تھی جب کہ جسٹس اسجد جاوید گورال نے ضمانت مسترد کر دی تھی جس پر عدالتِ عالیہ لاہور کے چیف جسٹس قاسم علی خان نے یہ معاملہ ریفری جج کو بھجوایا دیا تھا۔

واضح رہے گزشتہ برس ستمبر میں لاہور ہائی کورٹ نے آمدن سے زائد اثاثہ جات اور منی لانڈرنگ کیس میں شہباز شریف کی درخواست ضمانت مسترد کر دی تھی۔ جس کے بعد قومی احتساب بیورو نے انہیں احاطہ عدالت سے گرفتار کر لیا تھا۔

مزید خبریں

Disclaimer: Urduwire.com is only the source of Urdu Meta News (type of Google News) and display news on “as it is” based from leading Urdu news web based sources. If you are a general user or webmaster, and want to know how it works? Read More