مفت برگرنہ دینے پرگرفتاریاں، ایس ایچ او سمیت 9اہلکار معطل

سماء نیوز  |  Jun 14, 2021

فوٹو : ٹرپ ایڈوائزر

لاہور کے علاقے ڈیفنس میں ایک ریستوران سے مفت برگر کھانے کی فرمائش پوری نہ ہونے پر اختیارات کے غلط استعمال کے الزام میں ایس ایچ سمیت 9 اہلکاروں کو معطل کردیا گیا۔ آئی جی پنجاب کے حکم پر مزید تحقیقات شروع کردی گئیں۔

ڈیفنس فیز سکس میں واقع ریستوران ’جونی اینڈ جگنو‘، جہاں یہ مبینہ واقعہ پیش آیا، کی انتظامیہ نے اپنے فیس بک پیج پر ہفتے کی رات ایک پوسٹ میں سارا قصہ بیان کرتے ہوئے لکھا کہ کچھ روز قبل چند پولیس اہلکاروں نے ریستوران میں آکر مفت کھانے کی فرمائش کی جس سے انکار پر انہوں نے منیجر کو دھمکایا اور اگلے روز آکر عملے کو ہراساں کیا اور ریستوران بند کرنے کا کہا۔

پوسٹ کے مطابق 11 جون کی رات کچھ پولیس اہلکار ریستوران آئے اور منیجر کو بغیر کوئی وجہ بتائے حراست میں لے لیا۔

پوسٹ میں مزید کہا گیا ہے کہ ہمارے پورے ریستوران کو خالی کروا دیا گیا، تمام کچن کریو اور منیجرز کو باہر نکال دیا۔ انہوں نے انہیں زبردستی نکالا یہاں تک کہ انہوں نے کچن میں جلتے چولہے تک بند نہیں کرنے دیئے اور نہ ریستوران میں بیٹھے گاہکوں کے آرڈر مکمل کرنے دیئے۔

اپنی پوسٹ میں ریستوران انتظامیہ نے دعویٰ کیا کہ تقریباً 7 گھنٹے ہماری ٹیم کو حوالات میں زد و کوب کیا گیا، ہراساں کیا گیا صرف اس لئے کہ ہم نے انہیں مفت برگر نہیں دیئے تھے۔

ریستوران انتظامیہ کے مطابق عملے کے 19 اراکین کو ساری رات ایس ایچ او کے حکم پر حوالات میں رکھا گیا، بے گناہ ٹیم کو تھانے میں گھسیٹا جارہا ہے کیونکہ انہوں نے ’کسی خاص‘ کو مفت برگر دینے سے انکار کردیا تھا۔

پوسٹ کے آخر میں یہ بھی لکھا گیا ہے کہ 11 جون کی رات ہمارے ریستوران میں پیش آنے والا واقعہ پہلی بار نہیں اور ہمیں یقین ہے کہ یہ آخری بار بھی نہیں، یہ اس وقت تک نہیں رکے گا جب تک ہم ظلم کیخلاف خود اپنی آواز بلند نہیں کریں گے، ناانصافی اور ایک عام آدمی کیخلاف، طاقت کے ناجائز استعمال کیخلاف۔

ریستوران انتظامیہ نے اپنی فیس بک پوسٹ میں عوام سے اپیل کی کہ وہ اس ناانصافی اور زیادتی کو ہر ممکنہ پلیٹ فارم پر شیئر کریں۔

واقعہ سوشل میڈیا زیر گردش آیا تو اتوار کو پولیس کے اعلیٰ حکام نے نوٹس لیتے ہوئے ایکشن لیا۔ پنجاب پولیس کے ٹویٹر اکاؤنٹ پر کہا گیا کہ آئی جی پنجاب انعام غنی نے ’جونی اینڈ جگنو‘ ریستوران والے واقعے کا نوٹس لیتے ہوئے ڈیفنس سی تھانے کے ایس ایچ او اور ان کے ساتھ ملوث دیگر عملے کو معطل کردیا ہے۔

پولیس کے آفیشل اکاؤنٹس ٹویٹ میں مزید کہا گیا کہ کسی کو قانون ہاتھ میں لینے کی اجازت نہیں، کسی کے ساتھ بھی ناانصافی برداشت نہیں ہوگی اور ملوث تمام افراد کو سزا دی جائے گی۔

غیر ملکی میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے ’جونی اینڈ جگنو‘ کی انتظامیہ نے کہا کہ ایسا نہیں کہ ہم پولیس کیخلاف ہیں، لیکن صرف چند کالی بھیڑیں ہوتی ہیں جو اداروں کی ساکھ کو خراب کرتی ہیں، پولیس کے اعلیٰ حکام نے ایکشن لے لیا اور ہم نے اب معاملہ ان پر چھوڑ دیا ہے کیونکہ ہم انہیں وقت دینا چاہتے ہیں کہ وہ اپنے طریقے سے تحقیقات مکمل کریں۔

ان کا کہنا تھا جب یہ سب کچھ ہوا تو ہمیں سمجھ نہیں آرہا تھا کہ اس حوالے سے کیا کریں کیونکہ ہماری ٹیم کے ساتھ ناانصافی ہوئی تھی، پولیس میں کچھ افراد اپنی طاقت کا غلط استعمال کرتے ہیں، ہم عوام کے ساتھ یہ بات کرنا چاہتے تھے تاکہ ایک بحث شروع ہو جو مثبت تبدیلی کا سبب بنے، ہمیں خوشی ہے کہ لوگوں کے تعاون کی وجہ سے ایس ایچ او اپنے انجام تک پہنچا۔

مزید خبریں

Disclaimer: Urduwire.com is only the source of Urdu Meta News (type of Google News) and display news on “as it is” based from leading Urdu news web based sources. If you are a general user or webmaster, and want to know how it works? Read More