مصر میں چار سال بعد ایمرجنسی کا نفاذ ختم

سماء نیوز  |  Oct 26, 2021

فوٹو: اے ایف پی

مصر میں دہشت گردی سے نمٹنے کے لیے نافذ کی گئی ایمرجنسی چار سال بعد ختم کر دی گئی۔

جرمن ویب سائٹ ڈوئچے ویلے کے مطابق مصری صدر عبد الفتاح السیسی نے گزشتہ روز فیس بک پر اعلان کیا کہ مصر خطے میں سلامتی اور استحکام کا نخلستان بن چکا ہے۔

مصری صدر نے کہا کہ فیصلہ کیا گیا ہے کہ برسوں میں پہلی بار ملک کے تمام علاقوں میں ہنگامی حالات کا نفاذ ختم کر دیا جائے۔

مصر نے اپریل 2017 میں گرجا گھروں پر بم دھماکوں کے بعد ہنگامی حالت نافذ کی تھی جس میں ہر تین ماہ بعد توسیع کی جاتی تھی۔

حکومت کا دعویٰ ہے کہ ان بم دھماکوں کے وقت، مصر داعش کے عسکریت پسندوں سے منسلک تشدد کی بڑھتی ہوئی لہر سے نبرد آزما تھا اور خاص طور پر شمال مشرقی سینائی کے علاقے میں اس کا کافی اثر و رسوخ تھا۔

واضح رہے کہ ایمرجنسی کے تحت جہاں حکام کو وسیع تر اختیارات حاصل ہوئے، وہیں آزادی اظہار اور عوامی اجتماع جیسے عوام کے آئینی حقوق بھی سلب کر لیے گئے۔

دوسری جانب انسانی حقوق کے علمبردار گروپ صدر السیسی کی حکومت پر یہ کہہ کر شدید نکتہ چینی کرتے رہے ہیں کہ ایمرجنسی جیسے سخت اقدام کی آڑ میں حکومت اپنے مخالفین اور اپنے خلاف آوازوں کو کچلنے کا کام کرتی رہی۔

گزشتہ برس مئی میں، کرونا وائرس کی وبا سے نمٹنے کے لیے ہنگامی قانون میں مزید ترمیم کی گئی تھی، جس سے صدر کو مزید اختیارات حاصل ہو گئے اور فوجی عدالتوں کا دائرہ اختیار عام شہریوں تک بھی بڑھا دیا گیا۔

مزید خبریں

Disclaimer: Urduwire.com is only the source of Urdu Meta News (type of Google News) and display news on “as it is” based from leading Urdu news web based sources. If you are a general user or webmaster, and want to know how it works? Read More