کراچی میں عیدالاضحیٰ پر جانوروں کی قربانی میں کمی

سماء نیوز  |  Aug 05, 2020

رواں سال عیدالاضحیٰ کے تین دن کراچی میں جانوروں کی قربانی میں گزشتہ سال کے مقابلے میں کمی ریکارڈ کی گئی۔

سماء ڈیجیٹل نے انفرادی سطح پر عیدالاضحیٰ کے تین دن میں شہر قائد میں ہونیوالی قربانی کے اعداد و شمار جمع کئے۔

سابق چیئرمین آل پاکستان ٹینری ایسوسی ایشن گلزار فیروز کا کہنا ہے کہ گزشتہ سال کے مقابلے میں رواں سال کراچی میں 5 سے 10 فیصد کم قربانی ہوئی۔ انہوں نے کہا کہ وجوہات سے ہر شخص واقف ہے، کرونا وائرس کی وباء اور خراب معاشی حالات کے باعث پچھلے سال کے مقابلے میں قربانی میں کمی واقع ہوئی۔

گلزار فیروز نے بتایا کہ سال 2019ء میں عیدالاضحیٰ کے تین دن کے دوران ملک بھر میں مجموعی طور پر تقریباً 80 لاکھ جانور قربان کئے گئے، جن میں گائے، بکرے، بھیڑ اور اونٹ شامل تھے، جس کا 20 فیصد کراچی میں قربان کیا گیا جو 16 لاکھ بنتا ہے۔

سابق چیئرمین اے پی ٹی اے کا کہنا ہے کہ رواں سال شہر قائد میں ایک اندازے کے مطابق 15 لاکھ جانور ذبح کئے گئے۔ انہوں نے قربانی کی شرح میں کمی کی وجوہات بتاتے ہوئے کہا کہ کرونا وائرس کی وباء کے باعث زیادہ تر لوگوں نے اجتماعی قربانی میں حصہ لیا، کیونکہ وہ براہ راست قصائی یا دیگر افراد سے رابطے میں نہیں رہنا چاہتے تھے۔

ان کا کہنا ہے کہ کاروباری سرگرمیاں سست ہونے کے باعث بھی لوگوں کو معاشی مشکلات کا بھی سامنا ہے اور وہ گائے اور اونٹ کی اجتماعی قربانی میں حصہ ڈالا۔

گلزار فیروز نے مزید کہا کہ اس بار بکرے کی قیمت بہت زیادہ تھی، اجتماعی قربانی میں حصہ ڈالنے کی یہ بھی ایک وجہ رہی۔

الخدمت ویلفیئر ایسوسی ایشن کراچی کے ڈائریکٹر انجینئر محمد صابر نے بھی گزشتہ سال کے مقابلے میں کراچی میں جانوروں کی قربانی میں کمی کی تصدیق کی۔ ان کا کہنا تھا کہ ایک اندازے کے مطابق عید الاضحیٰ کے تین دن کے دوران تقریباً 10 لاکھ جانور ذبح کئے گئے۔

محمد صابر نے کہا کہ گزشتہ سال کے مقابلے میں شہر قائد میں تقریباً 20 فیصد کم جانور قربانی کئے گئے، ہمارے اعداد و شمار کے مطابق 2019ء میں عیدالاضحیٰ کے موقع پر 12 لاکھ جانور ذبح کئے گئے۔

الخدمت کراچی کے ڈائریکٹر نے گلزار فیروز کے اس نکتہ نظر کی تائید کی کہ رواں سال کرونا وائرس کی وباء کے باعث لوگوں کی بڑی تعداد نے اجتماعی قربانی میں حصہ لیا۔

کراچی سپر ہائی وے پر قائم ایشیا کی سب سے بڑی مویشی منڈی کے ترجمان یاور چاؤلہ کا نے سماء ڈیجیٹل سے گفتگو میں کہا کہ اس عید الاضحیٰ پر کراچی میں اوسطاً 40 فیصد افراد نے قربانی میں حصہ لیا۔

یاور نے اندازے کے مطابق اعداد و شمار کے تحت بتایا کہ اس سال عید الاضحٰی پر اجتماعی قربانی سمیت 15 لاکھ جانور ذبح کئے گئے، جن میں گائے، بکرے، بھیڑ اور اونٹ شامل ہیں۔

انہوں نے کہا کہ اس سال بکروں اور چھوٹے جانوروں کی قربانی میں تیزی دیکھنے میں آئی۔ ایک اندازے کے مطابق 10 لاکھ 50 ہزار چھوٹے جانور، بکرے اور بھیڑ اس سال قربان کئے گئے جبکہ 4 لاکھ 50 ہزار گائے ذبح ہوئیں۔

سندھ سالڈ ویسٹ مینجمنٹ بورڈ کی جانب سے آلائشیں اٹھانے کے اعداد و شمار بھی اس سال جانوروں کی قربانی میں کمی کی نشاندہی کررہے ہیں۔ ایس ایس ڈبلیو ایم بی کے ریکارڈ کے مطابق رواں سال عید الاضحیٰ کے 3 روز کے دوران شہر قائد سے 51 ہزار 312 ٹن آلائشیں اٹھائی گئیں۔

سندھ سالڈ ویسٹ مینجمنٹ بورڈ کے مطابق گزشتہ سال عیدالاضحیٰ کے تین دن کے دوران 53 ہزار 956 ٹن آلائشیں اٹھا کر ٹھکانے لگائی گئی تھیں، جس سے پتہ چلتا ہے کہ گزشتہ سال کے مقابلے میں اس سال آلائشوں میں 2644 ٹن کی کمی واقع ہوئی ہے۔

مزید خبریں

Disclaimer: Urduwire.com is only the source of Urdu Meta News (type of Google News) and display news on “as it is” based from leading Urdu news web based sources. If you are a general user or webmaster, and want to know how it works? Read More