مانیٹری پالیسی: ایک سال بعد شرح سود میں اضافہ

سماء نیوز  |  Sep 20, 2021

فوٹو: اے ایف پی

اسٹیٹ بینک آف پاکستان نے شرح سود میں 25 بیسس پوائنٹس کا اضافہ کردیا ہے جس سے آئندہ دو ماہ کیلئے شرح سود 7.25فیصد ہوگئی۔اسٹیٹ بینک کی زری پالیسی کمیٹی کا اجلاس پیر کو اسٹیٹ بینک ہیڈ آفس میں منعقد ہوا، جس میں شرح سود میں اضافے کا فیصلہ معاشی حالات اور مہنگائی کے امکانات کو دیکھتے ہوئے کیا گیا ہے۔ اسٹیٹ بینک کی مانیٹری پالیسی کمیٹی نے گزشتہ سال جون میں شرح سود 7 فیصد پر برقرار رکھا تھا جس کے بعد اسی سطح پر ایک سال برقرار رہنے کے بعد اکتوبر اور نومبر کیلئے پالیسی ریٹ بڑھا دیا گیا ہے۔

مانیٹری پالیسی کمیٹی اجلاس کے بعد میں کہا گیا ہے کہ جولائی میں ہونے والے پچھلے اجلاس کے بعد معاشی بحالی کی رفتار توقع سے زیادہ بڑھ گئی ہے۔ اجناس کی بین الاقوامی قیمتوں اور ملک میں طلب بڑھنے کے باعث درآمدات میں تیزی جاری کھاتے کے خسارے میں اضافے کی طرف لے جارہی ہے جس کا بوجھ پاکستانی روپے پر بھی بڑھ رہا ہے۔

اعلامیے میں مزید کہا گیا ہے کہ جاری کھاتے کا خسارہ جولائی میں بڑھ کر 0.8 ارب ڈالر اور اگست میں 1.5 ارب ڈالر ہوگیا۔ اس دوران ترسیلات زر میں 10.4 فیصد اضافہ ہوا اور برآمدات کی کارکردگی بھی بہتر رہی تاہم درآمدات نے انہیں بے اثر کردیا۔

اسٹیٹ بینک کے مطابق ملکی کرنسی مارکیٹ نے جون 2019ء سے مارکیٹ پر مبنی لچکدار نظام کے بعد عمدہ کارکردگی دکھائی اور اب تک پاکستانی روپے کی قدر میں 4.8 فیصد کمی آچکی ہے، یہ شرح س دوران دوسری ابھرتی مارکیٹوں کی کرنسیوں میں مقابلے میں کم ہے جبکہ اس دوران اسٹیٹ بینک کے زر مبادلہ کے ذخائر 3 گنا بڑھ کر 20 ارب ڈالر ہوچکے ہیں۔ زری پالیسی کمیٹی نے یہ بھی کہا ہے کہ برآمدات مستحکم رکھنا اور غیر ضروری درآمدات میں کمی لانے کیلئے اقدامات ناگزیر ہیں۔

مانیٹری پالیسی بیان میں کہا گیا ہے کہ کرونا کی تازہ ترین لہر قابو میں ہے، ویکسی نیشن میں مستقل پیشرفت ہورہی ہے اور حکومت نے وباء کو مجموعی طور پر قابو میں رکھا ہوا ہے، جس کی وجہ سے معاشی بحالی وباء سے متعلق غیر یقینی کیفیت کا شکار نہیں ہے۔ اس کے علاوہ مہنگائی کے خدشات کو قابو میں رکھنے اور جاری کھاتے کے خسارے میں اضافے کو آہستہ کرنے کیلئے مناسب پالیسیوں کو یقینی بنانے پر زیادہ زور دینے کی ضرورت ہے۔

مانیٹری پالیسی کا اعلان ہر دو ماہ بعد کیا جاتا ہے جس میں معاشی جائزے کے بعد نئی مانیٹری پالیسی کی منظوری دی جاتی ہے، آئندہ مانیٹری پالیسی کا اعلان رواں مالی سال 26 نومبر کو کیا جائے گا۔

مزید خبریں

Disclaimer: Urduwire.com is only the source of Urdu Meta News (type of Google News) and display news on “as it is” based from leading Urdu news web based sources. If you are a general user or webmaster, and want to know how it works? Read More