سعودی آرامکو تیل کمپنی نے منافع کمانے کا اپنا ہی ریکارڈ توڑ ڈالا

بی بی سی اردو  |  Aug 15, 2022

Getty Images

سعودی عرب کی سب سے بڑی تیل کمپنی سعودی آرامکو نے سنہ 2022 کی دوسری سہ ماہی میں 48 ارب 40 کروڑ کا منافع کما کر اپنا ہی ریکارڈ توڑ دیا ہے۔

یہ سالانہ بنیادوں پر 90 فیصد اضافہ ہے اور توانائی برآمد کرنے والی دنیا کی سب سے بڑی کمپنی کی اب تک کی سب سے بڑی آمدنی ہے۔

یوکرین پر روس کے حملے کے بعد سے تیل اور گیس کی قیمتوں میں بے پناہ اضافہ ہوا ہے۔

روس دنیا میں تیل کے سب سے بڑے برآمد کنندگان میں سے ہیں مگر مغربی ممالک نے توانائی کے لیے روس پر انحصار کم کرنے کا اعلان کر رکھا ہے۔

خبر رساں ادارے بلومبرگ کے مطابق اس سعودی کمپنی کے منافعے کی رقم سٹاک مارکیٹ میں لسٹڈ کسی بھی کمپنی کا سب سے بڑا سہ ماہی منافع ہے۔

ریکارڈ منافعے کے علاوہ اس سرکاری کمپنی نے یہ بھی اعلان کیا کہ وہ تیسری سہ ماہی میں اپنے ڈیویڈینڈ کی رقم 18.8 ارب ڈالر ہی رکھے گی اور کوئی تبدیلی نہیں کرے گی۔

یہ بھی پڑھیے

سعودی تیل کی کہانی، یہ دولت کب آئی اور کب تک رہے گی؟

امریکہ نے زیر زمین غاروں میں تیل کے خفیہ ذخیرے کیوں قائم کر رکھے ہیں؟

عرب ’تیل کا وہ جھٹکا‘ جس کے آگے عالمی معیشتیں مجبور ہو جاتی ہیں

کمپنی کا یہ بھی کہنا ہے کہ وہ طلب کو پورا کرنے کے لیے اپنے آپریشنز میں وسعت لاتی رہے گی۔

آرامکو کے صدر اور چیف ایگزیکٹیو امین نصر نے کہا کہ 'جہاں عالمی مارکیٹ میں عدم استحکام اور اقتصادی غیر یقینی اب بھی موجود ہے وہیں اس سال کے پہلے نصف میں ہونے والے واقعات سے ہمارے اس موقف کو تقویت ملتی ہے کہ ہماری صنعت میں سرمایہ کاری کا جاری رہنا منڈیوں میں رسد کی وافر فراہمی اور متبادل توانائی کی جانب ہموار انداز میں منتقلی یقینی بنانے کے لیے ضروری ہے۔'

اُنھوں نے مزید کہا کہ درحقیقت اُنھیں توقع ہے کہ تیل کی طلب میں منفی معاشی پیش گوئیوں کے باوجود اگلی ایک دہائی تک اضافہ ہوتا رہے گا۔

Reuters

واضح رہے کہ یوکرین پر روسی حملے سے پہلے سے تیل کی قیمتوں میں اضافہ ہو رہا تھا کیونکہ کووڈ 19 سے بحالی کے دور میں دنیا بھر میں تیل کی طلب میں اضافہ ہو رہا تھا جبکہ اس کی رسد کم تھی۔

دنیا میں تیل پیدا کرنے والی سب سے بڑی کمپنیوں ایگزون موبل، شیورون اور برٹش پیٹرولیم سبھی نے رواں سال بھاری منافعے ظاہر کیے ہیں جس کے باعث حکومتوں سے مطالبہ کیا جا رہا ہے کہ وہ ان کمپنیوں پر بھاری ٹیکس عائد کریں۔

جون میں امریکہ کے صدر جو بائیڈن نے کہا تھا کہ ایگزون موبل نے "اس سال خدا سے بھی زیادہ پیسہ بنا لیا ہے۔'

سعودی عرب تیل پیدا کرنے والے ممالک کی تنظیم اوپیک کا سب سے بڑا پیداواری ملک ہے۔ گذشتہ ہفتے اوپیک+ نے تیل کی پیداوار میں معمولی سے اضافے کی منظوری تھی تاکہ بلند قیمتوں کو نیچے لایا جا سکے۔ مگر اس کے باوجود پیداوار میں تازہ ترین اضافہ بھی حالیہ مہینوں کے مقابلے میں کافی سست رو ہے۔

یہ فیصلہ صدر جو بائیڈن سمیت کئی عالمی رہنماؤں کے لیے ایک دھچکا تھا کیونکہ وہ تیل کی پیداوار میں اضافے کا مطالبہ کر رہے تھے۔

مزید خبریں

Disclaimer: Urduwire.com is only the source of Urdu Meta News (type of Google News) and display news on “as it is” based from leading Urdu news web based sources. If you are a general user or webmaster, and want to know how it works? Read More