ٹی ٹوئنٹی: پاکستان نے انتہائی سنسنی خیز مقابلے کے بعد انگلینڈ کو شکست دیدی

ہم نیوز  |  Sep 25, 2022

کراچی: پاکستان نے 7 میچز پر مشتمل ٹی ٹوئنٹی سیریز کے چوتھے میچ میں انگلینڈ کو شکست دے دی ہے۔ پاکستان نے جیت کے لیے انگلینڈ کو 167 رنز کا ہدف دیا تھا لیکن پوری ٹیم ہدف کے تعاقب میں 163 رنز بنا کر آؤٹ ہو گئی۔

ہم نیوز کے مطابق پاکستان نے مقررہ 20 اوورز میں 4 وکٹوں پر 166 رنز بنائے، محمد رضوان 88  رنز بنا کر نمایاں بلے باز رہے ہیں۔

پاکستان کی جانب سے بلے بازی کرتے ہوئے کپتان بابر اعظم نے 36 اور شان مسعود نے 21 رنز بنائے جب کہ آصف علی نے تین گیندوں پر 13 رنز کا اضافہ کیا۔

میچ میں انگلینڈ کی جانب سے ریسی ٹوپلے نے دو کھلاڑیوں کو پویلین کی راہ دکھائی جب کہ لیام ڈاوسن اور ڈیوڈ ولی کے حصے میں ایک ایک وکٹ آئی۔

نیشنل اسٹیڈیم کراچی میں کھیلے جانے والے میچ میں انگلینڈ کے کپتان معین علی نے ٹاس جیت کر پاکستان کو پہلے بیٹنگ کی دعوت دی تھی۔

🚨 T O S S A L E R T 🚨

England win the toss and opt to bowl first 🏏#PAKvENG | #UKSePK pic.twitter.com/ymi9vsS9Bk

— Pakistan Cricket (@TheRealPCB) September 25, 2022

اس میچ کے لیے پاکستان کی ٹیم میں دو تبدیلیاں کی گئی ہیں۔ حیدر علی اور شاہنواز دھانی کی جگہ آصف علی اور وسیم جونیئر کو پلیئنگ الیون کا حصہ بنایا گیا ہے جب کہ انگلش ٹیم نے بھی تین تبدیلیاں کی ہیں۔

2️⃣ changes to our playing XI today 👇#PAKvENG | #UKSePK pic.twitter.com/RLDp1A3did

— Pakistan Cricket (@TheRealPCB) September 25, 2022

انگلینڈ کی کرکٹ ٹیم کے کپتان معین علی نے پاکستان کو بلے بازی کی دعوت دینے کے بعد گفتگو میں کہا کہ ہماری بیٹنگ اچھی ہے، ہدف حاصل کرنا آسان ہوگا، وکٹ کو سمجھنا اتنا آسان نہیں ہے۔

پاکستان کرکٹ ٹیم کے کپتان بابرعلی نے اپنی بات چیت میں کہا کہ گزشتہ میچ سے بہتروکٹ لگ رہی ہے، کراچی کی پچ پر بڑے اسکور بنتے ہیں، ہمارے پاس 150 رفتار والے باؤلرز ہیں۔

انگلینڈ سے تاریخی فتح، بابر اعظم کے نام بڑا اعزاز

دونوں ممالک کی کرکٹ ٹیموں کے درمیان کھیلی جانے والی ٹی ٹوئنٹی میچوں کی سیریز میں انگلینڈ کو دو ایک سے برتری حاصل ہے۔

بابراعظم کی سنچری سے واپسی، انگلینڈ کو دس وکٹوں سے شکست

واضح رہے کہ پاکستان کرکٹ ٹیم آج اپنا 200 واں ٹی ٹوئنٹی انٹرنیشنل میچ کھیل رہی ہے، قومی کرکٹ ٹیم ٹی ٹوئنٹی انٹرنیشنل میچز کی ڈبل سنچری مکمل کرنے والی پہلی ٹیم بن گئی ہے۔

مزید خبریں

Disclaimer: Urduwire.com is only the source of Urdu Meta News (type of Google News) and display news on “as it is” based from leading Urdu news web based sources. If you are a general user or webmaster, and want to know how it works? Read More