18سالہ لڑکی کی بچے کو واش روم میں جنم دینے کے بعد اسے فلش میں بہانے کی کوشش

روزنامہ اوصاف  |  Jan 15, 2020

لاہور (مانیٹرنگ ڈیسک ) گذشتہ روز کوٹ خواجہ سعید ہسپتال میں ایک خاتون نے بچے کو واش روم میں جنم دینے کے بعد مارنے کی کوشش کی تھی جسے ناکام بنا دیا گیا تھا۔میڈیاکی رپورٹ کے مطابق بچے کی حالت خطرے سے باہر ہے۔بچے کو وارڈ میں رکھا گیا ہے۔اسپتال انتظامیہ کا کہنا ہے کہ 18 سالہ مہوش غیرشادی شدہ ہے اور معدے کے درد کا بہانہ لے کر آئی تھی۔ جب ڈاکٹرز نے انکوائری کی تو لڑکی اور اس کے ساتھ ائی خواتین بہانہ بنا واش روم چلی گئیں اور وہاں بچے جو جنم دیا۔نوجوان نے لڑکی نے بچے کو واش روم کے فلش میں بہا کر مارنے کی کوشش کی  جسے خاتون سویپر نے ناکام بنایا۔ایف آئی آر کے مطابق نوجوان لڑکی ڈلیوری کے لیے اسپتال آئی، مریضہ کو اسپتال کے سینٹری ورکر علی اور ثوبیہ کے تعاون سے داخل کیا گیا۔ ذرائع کے مطابق پولیس نے بچے کے والد کی تلاش بھی شروع کر دی ہے۔خیال رہے کہ کوٹ خواجہ سعید ہسپتال میں ایک خاتون نے بچے کو واش رو م میں جنم دینے کے بعد مارنے کی کوشش کی۔ہسپتال انتظامیہ کی جانب سے بچے کو مارنے کی کوشش کو ناکام بنا دیا گیا۔لاہور کے علاقے شادباغ کی لڑکی نے خواجہ سعید ہسپتال میں بچے کو جنم دیا ۔ہسپتال کے ایم ایس ڈاکٹر علی بھٹی نے واقع کے تصدیق کر دی۔ خاتون کو ہسپتال کے عملے کی مدد سے داخل کیا گیا جس کے بعد خاتون نے بچے کو جنم دینے کے بعد مارنے کی کوشش کی۔خاتون نے بچے کو جنم دیا او رواش روم کے فلش کی ٹینکی میں پھینک کر مارنے کی کوشش کی گئی۔خاتون نے بچے کو شاپر میں بند کر کے فلش کی ٹینکی میں پھینکا ۔ ۔ واقعے کی خبر ملتے ہی ہسپتال کے عملے کی ہوشیاری سے بچے کو فوراََ فلش سے باہر نکالا گیا اور بچے کو فوراََ ایمرجنسی وارڈ میں داخل کر دیا گیا جس کے بعد بچے کی حالت خطرے سے باہربتائی گئی۔پولیس کی جانب سے کاروائی کرتے ہوئے ملزمان کے خلاف مقدمہ درج کر لیا گیا جب کہ لڑکی مہوش سے پوچھ گچھ جاری ہے۔
مزید خبریں

Disclaimer: Urduwire.com is only the source of Urdu Meta News (type of Google News) and display news on “as it is” based from leading Urdu news web based sources. If you are a general user or webmaster, and want to know how it works? Read More