اگر حکومت فرنیچر کی صنعت  کو سہولیات دے کر فروغ دے تو پاکستان ایک ارب ڈالر تک کا فرنیچر برآمد کرنے کی صلاحیت رکھتا ہے: میاں طارق مصباح

نوائے وقت  |  Oct 17, 2020

لاہور(کامرس رپورٹر )   لاہور چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے صدر میاں طارق مصباح نے کہا ہے کہ اگر حکومت فرنیچر کی صنعت  کو سہولیات دے کر فروغ دے تو پاکستان ایک ارب ڈالر تک  کا فرنیچر برآمد کرنے کی صلاحیت رکھتا ہے۔3 روز ہ  ’فرنیچر لیونگ ایکسپو     ‘     میں بطور مہمان خصوصی خطاب کرتے ہوئے، لاہور چیمبر کے صدر میاں طارق مصباح نے کہا کہ برآمد پر مبنی فرنیچر انڈسٹری اور ویلیو ایڈڈ سیکٹر کی حوصلہ افزائی کی جائے اور سہولت دی جانی چاہئے۔

صدرنے آرگنائزر ایونٹ ڈاکٹر نازش فیصل کو اپنی نوعیت کی ایسی عظیم نمائش کے انعقاد پر مبارکباد پیش کی جو نہ صرف فرنیچر کی برآمدات کے امکانات کو بہتر بنانے پر توجہ مرکوز کررہی ہے بلکہ مقامی مارکیٹ کی بھی مدد کررہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ اس 3 روزہ ایکسپو میں تقریبا 50 اعلی برانڈز کے فرنیچر میکرز نے حصہ لیا ہے۔ انہوں نے نمائش کنندگان کو ایکسپو میں شرکت کرنے اور ان کے  بہترین فرنیچر آرٹیکلز کی نمائش کو بھی سراہا۔میاں طارق مصباح نے کہا نمائشیں ہمیشہ فرنیچر جیسی مصنوعات کو فروغ دینے میں اہم کردار ادا کرتی ہیں فرنیچر جیسی نمائشیں  متواتر ہونی چاہییں۔انہوں نے کہا کہ پاکستان کی فرنیچر کی برآمدات محض 2.6 ملین ڈالر ہیں جبکہ عالمی فرنیچر کی تجارت 90 بلین ڈالر کو چھو رہی ہے، انہوں نے مزید کہا کہ پاکستان کے لئے امریکہ، جرمنی، برطانیہ اور فرانس وغیرہ میں اپنے فرنیچر کی برآمدات میں اضافہ کرنے کی بہت بڑی صلاحیت موجود ہے جو دنیا میں فرنیچر کے سب سے بڑے درآمد کنندہ ہیں۔

لاہور چیمبر کے صدر نے کہا کہ اس شعبے میں کچھ انوویشنز  کے ساتھ پاکستان اس شعبے میں بین الاقوامی سطح پر مسابقتی پوزیشن حاصل کرسکتا ہے, ہمیں بس ضرورت ہے اپنے فرنیچر ڈیزائن کو جدید بنائیں اور ان مضامین کو قومی اور بین الاقوامی سطح پر مسابقتی قیمت پر مارکیٹ کریں۔صدر لاہور چیمبر نے کہا کہ ایکسپو زپاکستان اور باہر، پاکستانی فرنیچر، اسسیسریز اور انٹیرئر کو فروغ دینے اور متعارف کرانے میں معاون ثابت ہوں گی۔ انہوں نے امید ظاہر کی کہ یہ نمائش پاکستانی فرنیچر، فکسچر اور فرنشننگ سامان کی حیرت انگیز صلاحیت اور ایکسپورٹ کے لئے نئے مقامات کھولے گی جو اعلی معیار کے ساتھ تیار کی جارہی ہیں۔کرونا وائرس کی وجہ سے  ایونٹس، شادی بیاہ، نئے تعمیر شدہ مکانات، اسٹورز،  عمارتوں میں کام رک گیا تھا۔ کاروبار زندگی دوبارہ شروع ہونے سے فرنیچر کی طلب میں اضافہ ہو گیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ یہ شعبہ متعدد مہارت رکھنے والے افراد کے لئے روزگار کے مواقع پیدا کرتا ہے اور پیداواری صلاحیت میں بھی اضافہ کر رہا ہے جس کے نتیجے میں پیداوار اور برآمدات میں اضافہ ہو رہا ہے، انہوں نے مزید کہا کہ ''ملک کو معیشت کی بحالی کی ضرورت ہے، اور اس  کے حصول کے لئے حکومت کو چاہئے کہ  وہ ا س شعبے پر خصوصی توجہ دے ''.

میاں طارق مصباح نے کہا کہ فرنیچر کی برآمدات کو فروغ دینے کے لئے بین الاقوامی منڈیوں کو تلاش کرنے کی اشد ضرورت ہے۔ انہوں نے کہا کہ جارحانہ مارکیٹنگ کی حکمت عملی اور پاکستانی مصنوعات کی اہمیت کو مدنظر رکھ کر مختصر مدت میں برآمدات کو دوگنا کیا جا سکتا ہے۔

مزید خبریں

Disclaimer: Urduwire.com is only the source of Urdu Meta News (type of Google News) and display news on “as it is” based from leading Urdu news web based sources. If you are a general user or webmaster, and want to know how it works? Read More