پنجاب: ننکانہ صاحب میں فائرنگ، احمدی ڈاکٹر قتل

سماء نیوز  |  Nov 21, 2020

پنجاب کے علاقے ننکانہ صاحب میں فائرنگ کرکے ایک احمدی ڈاکٹر کو قتل کردیا گیا، واقعے 3 افراد زخمی بھی ہوئے۔

پولیس نے سانگلہ ہل کے نواحی گاؤں مڑھ بلوچاں میں پیش آنیوالے واقعے کا مقدمہ درج کرلیا، ایف آئی آر کے مطابق درخواست گزار کا کہنا ہے کہ مقتول اور زخمیوں کا تعلق احمدیہ کمیونٹی سے ہے۔

احمدیہ برادری کے ترجمان سلیم الدین نے بھی واقعے کی تصدیق کرتے ہوئے ایک بیان جاری کیا ہے جس میں بتایا گیا ہے کہ ننکانہ صاحب میں فائرنگ سے ڈاکٹر طاہر محمود ہلاک اور ان کے خاندان کے دیگر 3 افراد زخمی ہوئے۔

مدعی نے مزید کہا کہ واقعے کے بعد احمدیہ برادری میں شدید خوف و ہراس اور عدم تحفظ کا احساس پایا جاتا ہے۔

پولیس کی جانب سے درج ایف آئی آر کے مطابق معہد نامی نوجوان نے مقتول اور زخمیوں پر اس وقت فائرنگ کی جب وہ عبادت کی ادائیگی بعد گھر جارہے تھے۔ درخواست گزار کا کہنا ہے کہ نوجوان سے تفتیش ہوگی تو پتہ چلے گا کہ اس نے فائرنگ کیوں کی۔

سانگلہ ہل پولیس اسٹیشن میں پاکستان پینل کوڈ کی دفعات 302 (قتل)، اور 324 (اقدام قتل) کے تحت مقدمہ درج کیا گیا ہے جبکہ ایف آئی آر میں انسداد دہشت گردی ایکٹ کا سیکشن 7 بھی شامل کیا گیا ہے۔

احمدی برادری کے ترجمان کا کہنا ہے کہ رواں سال مختلف حملوں میں 5 احمدی ہلاک ہوچکے ہیں، ریاست نے پاکستان میں مقیم احمدیوں کی حالت زار پر ہمیشہ کی طرح آنکھیں بند کر رکھی ہیں۔

وزیراعظم نے واقعے کی تحقیقات کا حکم دیدیا

وزیراعظم عمران خان کے معاون خصوصی برائے مذہبی ہم آہنگی علامہ طاہر محمود اشرفی نے احمدی برادری سے تعلق رکھنے والے شہری کی ہلاکت کی مذمت کی ہے۔

ٹویٹر پر جاری اپنے بیان میں ان کا کہنا ہے کہ تمام مسالک سے تعلق رکھنے والے مذہبی رہنماؤں کا قرآن پاک کی اس آیت پر اتفاق ہے کہ جس میں واضح کیا گیا ہے کہ کسی ایک انسان کا قتل پوری انسانیت کا قتل ہے۔

انہوں نے مزید کہا وزیراعظم عمران خان نے ننکانہ صاحب میں احمدی کی ہلاکت کا نوٹس لیتے ہوئے واقعے کی تحقیقات کا حکم دیا ہے، اس حوالے سے انصاف ہوگا۔

مزید خبریں

Disclaimer: Urduwire.com is only the source of Urdu Meta News (type of Google News) and display news on “as it is” based from leading Urdu news web based sources. If you are a general user or webmaster, and want to know how it works? Read More