امریکی نیول اہلکاروں کا قتل: سعودی عرب کے خلاف ہرجانے کا مقدمہ درج

ہم نیوز  |  Feb 23, 2021

امریکی رسیاست فلوریڈا میں سال 2019 میں سعودی شہری کے ہاتھوں تین نیول اہلکاروں کے قتل کے حوالے سے ہرجانے کا مقدمہ سعودی عرب کے خلاف درج کرلیا گیا ہے۔

فوجی تربیتی ادارے نیول ایئر اسٹیشن پینساکولا پر 6 دسمبر 2019 کو ہوا بازی کے شعبے میں زیر تربیت ایک سعودی اہلکار نے فائرنگ کر کے تین امریکی نیوی کے اہلکاروں کو ہلاک کردیا تھا۔ حملے میں 13 اہلکار زخمی بھی ہوئے تھے۔

متاثرہ خاندانوں نے پینساکولا کی عدالت میں مؤقف اختیار کیا ہے کہ زیر تربیت سعودی نیول اہلکار کی انتہا پسند اور بنیاد پرست سوچ اور اس کے القاعدہ سے رابطے کے بارے میں سعودی عرب کو معلوم تھا۔ بروقت اقدامات اٹھاکر سعودی عرب ان ہلاکتوں کو رکواسکتا تھا۔

مزید پڑھیں: 

امریکی نیول اہلکاروں پر حملہ آور رائل سعودی ایئر فورس کا فلائٹ طالب علم تھا اور اس کی شناخت محمد سعید الشامرانی کے طور پر ہوئی تھی تاہم وہ جوابی کارروائی میں مارا گیا تھا۔

اس واقع سے متعلق تفتیش کے دوران  امریکی عہدیداروں نے انکشاف کیا تھا کہ سعودی شہری نے واردات کرنے سے قبل اس کی باقاعدہ منصوبہ کی تھی اور وہ القاعدہ سے بھی مسلسل رابطے میں تھا۔

متاثرہ خاندانوں نے عدالت میں مؤقف اختیار کیا ہے سعودی ایئر فورس کا اہلکار انتہا پسندانہ پوسٹیں سوشل میڈیا اکاؤنٹ پر مسلسل شیئر کرتا تھا تاہم سعودی حکومت نے معاملات کو نظر انداز کیا تھا۔

متاثرہ خاندان نے مؤقف اختیار کیا ہے کہ  واردات سے ایک رات قبل الشامرانی نے اپنے دیگر زیر تربیت سعودی ساتھیوں کو حملے کے بارے میں بتایا تھا انہوں نے امریکہ کے متعلقہ عہدیداروں کو اس حوالے سے آگاہ نہیں کیا بلکہ ایک ساتھی سعودی اہلکار نے حملے کی ویڈیو بھی بنا ڈالی۔

مزید خبریں

Disclaimer: Urduwire.com is only the source of Urdu Meta News (type of Google News) and display news on “as it is” based from leading Urdu news web based sources. If you are a general user or webmaster, and want to know how it works? Read More