قومی اسمبلی میں ’نامناسب رویہ‘، شاہد خاقان عباسی سے معافی کا مطالبہ

اردو نیوز  |  Apr 21, 2021

پاکستان کی قومی اسمبلی کے سیکرٹریٹ نے مسلم لیگ ن کے رکن اسمبلی اور سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کو پارلیمنٹ کی کارروائی میں خلل ڈالنے کے الزام میں نوٹس جاری کرتے ہوئے ان سے سات دن میں وضاحت طلب کی ہے۔

بدھ کو قومی اسمبلی کے سپیکر اسد قیصر نے ٹوئٹر پر شاہد خاقان عباسی کو جاری کیا گیا نوٹس شیئر کرتے ہوئے لکھا کہ ’رکن قومی اسمبلی شاہد خاقان عباسی کو 20 اپریل کو غیر پارلیمانی رویہ اختیار کرنے اور اپنے طرز عمل سے قومی اسمبلی کی کارروائی میں خلل ڈالنے پر نوٹس جاری کردیا گیا ہے۔‘

اسد قیصر نے لکھا کہ ’ایوان کے ماحول کو خراب کرنے اور نامناسب رویہ اختیار کرنے کی اجازت کسی کو نہیں دی جائے گی۔‘

نوٹس میں کہا گیا ہے کہ ’سپیکر نے آپ کے مسلسل بُرے اور پارلیمانی روایات کے خلاف رویے کا سخت نوٹس لیا ہے خاص طور پر 20 اپریل کو ایوان کی کارروائی میں خلل ڈالنے پر نوٹس جاری کیا جاتا ہے۔‘

نوٹس میں شاہد خاقان عباسی سے سات دن میں معافی مانگنے اور اپنی پوزیشن کی وضاحت پیش کرنے کے لیے کہا گیا ہے، ’اور اگر ایسا نہ کیا گیا تو سمجھا جائے گا کہ آپ کے پاس اپنے دفاع میں کہنے کو کچھ نہیں۔‘

رکن قومی اسمبلی شاہد خاقان عباسی کو 20 اپریل کو غیر پارلیمانی رویہ اختیار کرنے اور اپنے طرز عمل سے قومی اسمبلی کی کاروائی میں خلل ڈالنے پر قومی اسمبلی کی جانب سے لیٹر جاری کردیا گیا۔ ایوان کے ماحول کو خراب کرنے اور نامناسب رویہ اختیار کرنے کی اجازت کسی کو نہیں دی جائیگی۔ pic.twitter.com/0irhV3YFjm

— Asad Qaiser (@AsadQaiserPTI) April 21, 2021

خیال رہے کہ فرانس کے سفیر کو ملک بدر کرنے کے معاملے پر بحث کے لیے پیش کی گئی قرارداد کے دوران شاہد خاقان عباسی اور سپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر کے درمیان تلخ کلامی ہوئی تھی۔

شاہد خاقان عباسی نے سپیکر قومی اسمبلی کی جانب سے فلور پر بات کرنے کی اجازت نہ دینے پر ان کو جوتا مارنے کی دھمکی دی تھی۔

تحریک انصاف کے رہنماؤں نے شاہد خاقان عباسی سے معافی مانگنے کا مطالبہ کیا تھا جبکہ سوشل میڈیا پر بھی ان کے بیان کے بعد مہم چلائی گئی۔

احمد نامی ٹوئٹر ہینڈل سے شاہد خاقان عباسی کو جاری کیے گئے نوٹس پر لکھا گیا کہ ’تحریری معافی آجائے گی اور بات ختم؟ ان کی رکنیت چار چھ ماہ کے لیے منسوخ کریں۔‘

بعض صارفین نے سپیکر اسد قیصر پر بھی ان کے ایوان چلانے کے طریقہ کار کی وجہ سے تنقید کی ہے۔ اسد نوید نامی صارف نے لکھا کہ ’اور جو حال جناب نے اس اسمبلی کا کر دیا اس کی شکایت کہاں کریں؟‘

مزید خبریں

Disclaimer: Urduwire.com is only the source of Urdu Meta News (type of Google News) and display news on “as it is” based from leading Urdu news web based sources. If you are a general user or webmaster, and want to know how it works? Read More