این اے 133 ضمنی انتخاب: شائستہ پرویز ملک کو ڈسٹرکٹ مانیٹرنگ آفیسر کا نوٹس جاری

بول نیوز  |  Nov 28, 2021

ڈسٹرکٹ مانیٹرنگ آفیسر حلقہ این اے 133 لاہور نے امیدوار شائستہ پرویز ملک کو نوٹس جاری کرکے ان سے ووٹ خریدنے کے معاملے پر وضاحت طلب کرلی۔

نوٹس میں ان کے کارکنان کی جانب سے ووٹرز کو پیسے دے کر ووٹ خریدنے کی بابت 29 نومبر تک جواب طلب کیا گیا ہے۔

قبل ازیں، الیکشن کمیشن بھی لاہور کے حلقہ این اے 133 میں ضمنی الیکشن میں ووٹ خریدنے سے متعلق فوٹیج کا نوٹس لے چکا ہے۔

ریٹرننگ افسر سید باسط علی نے ڈی سی لاہور، آئی جی پولیس پنجاب، چئیرمین نادرا اور چئیرمین پیمرا کو خط لکھتے ہوئے تیس نومبر تک متعلقہ معلومات طلب کر لیں۔

آر او کی جانب سے جاری مراسلے میں کہا گیا کہ سوشل میڈیا اور ٹی وی چینلز پر فوٹیج گردش میں ہے، جس میں ووٹرز میں پیسے تقسیم کیے جا رہے ہیں اور حق میں ووٹ دینے کا حلف لیا جا رہا ہے۔

جاری مراسلے میں ہدایت کی گئی کہ ڈی سی لاہور اور آئی جی پولیس فوٹیج کا فارنزک کروائیں اور اس کی صداقت معلوم کریں۔ ساتھ ہی فوٹیج میں موجود افراد کی شناخت کروائی جائے اور ملوث افراد کا مکمل بائیو ڈیٹا فراہم کیا جائے۔

ڈی سی لاہور اور آئی جی پولیس کو عمارت کی شناخت کرنے کی بھی ہدایت کی گئی ہے۔

آئی جی پولیس کو ریٹرننگ آفیسر کی جانب سے جاری مراسلے میں کہا گیا کہ غیر قانونی حرکات میں ملوث شخص کو گرفتار کیا جائے۔

قبل ازیں، این اے 133 کے ضمنی انتخاب میں پاکستان مسلم لیگ (ن) کی جانب سے پاکستان پیپلزپارٹی پر مبینہ طور پر ووٹ خریدنے کا الزام عائد کیا گیا تھا۔

مسلم لیگ (ن) کے کارکن محمد عارف کی جانب سے الیکشن کمیشن آف پاکستان کو باقاعدہ تحریری شکایت درج کروائی گئی۔

پاکستان الیکشن کمیشن کو جمع کروائی گئی شکایت کے ساتھ ووٹ خریداری کے ویڈیو ثبوت بھی جمع کروائے گئے ۔

شکایت میں موقف اپنایا گیا کہ پاکستان پیپلزپارٹی کے امیدوار اسلم گل کی طرف سے حلقہ این اے 133 میں ووٹوں کی خریداری جاری ہے۔

شکایت میں بتایا گیا کہ امیدوار کے مرکزی انتخابی دفتر، پیکو روڈ اور مادر ملت روڈ پر فیصل میر کے ڈیرے ووٹ خریداری کے بڑے مراکز ہیں۔

شکایت میں کہا گیا کہ ووٹروں کے شناختی کارڈ چیک کر کے ان کی مذہبی کتاب پر پیپلزپارٹی کے امیدوار کو ووٹ دینے کا حلف لے کر فی کس 2 ہزار روپے دئیے جا رہے ہیں۔

شکایت کے مطابق ووٹوں کی خریداری الیکشن ایکٹ کے سیکشن 167، 168 اور ضابطہ فوجداری کی دفعہ 174 کے تحت قابل سزا جرم ہے۔

درخواست گزار کا موقف ہے کہ الیکشن کمیشن اپنے ذرائع سے ان معلومات اور شکایت کی تصدیق کر سکتا ہے، پہلے بھی ایسی شکایت درج کروائی گئی تھی لیکن ثبوت نہ ہونے کا کہہ کر اس پر کوئی ایکشن نہیں لیا گیا تھا، الیکشن کمیشن ووٹوں کی خریداری کے لئے رشوت اور کرپٹ پریکٹسز روکنے کا پابند ہے۔

الیکشن کمیشن میں دائر درخواست میں استدعا کی گئی کہ اسلم گل اور ان کے ساتھیوں کے خلاف سخت ایکشن لیا جائے اور اسلم گل کو نااہل قرار دیا جائے۔

Square Adsence 300X250
مزید خبریں

Disclaimer: Urduwire.com is only the source of Urdu Meta News (type of Google News) and display news on “as it is” based from leading Urdu news web based sources. If you are a general user or webmaster, and want to know how it works? Read More