کرپٹو کرنسی: کروڑوں ڈالر کے مبینہ فراڈ میں دو افراد گرفتار

بی بی سی اردو  |  Nov 22, 2022

Getty Images

مشرقی یورپی ملک اسٹونیا میں پولیس نے کرپٹو کرنسی کے 575 ملین ڈالر کے فراڈ میں مبینہ طور پر لاکھوں لوگوں کو نقصان پہنچانے کے الزام میں دو افراد کو گرفتار کیا ہے۔

اسٹونیا کی پولیس نے اس دھوکہ دہی کا سراغ امریکی تفتیشی ادارے ایف بی آئی کی مدد سے لگایا ہے اور امریکی حکام کا مطالبہ ہے کہ ان دو افراد کو امریکہ کے حوالے  کیا جائے۔

اسٹونین سرگئی پوٹاپنکو اور ایوان ٹرگیون دونوں 37 برس کے ہیں اور ان پر الزام ہے کے انھوں نے ہزاروں لوگوں کو دھوکہ دیکر کرپٹو کرنسی کی ایک مائینگ سروس ’ہیش فلیئر‘ میں سرمایہ کاری کی ترغیب دی اور متاثرین سے پیسے وصول کرنے کے لیے  ایک جعلی آن لائن بینک بھی بنایا۔

امریکی حکام نے ان دونوں کی حوالگی کے لیے اسٹونیا سے درخواست کر دی ہے۔

اس حوالے سے امریکی محکمۂ انصاف نے ایک بیان جاری کیا ہے جس میں کہا گیا ہے کہ مذکورہ دو افراد رقم ایک جگہ سے دوسری جگہ بھجوانے میں دھوکہ دہی کے مرتکب ہوئے اور انھوں نے منی لانڈرنگ کی سازش بھی کی ہے۔ امریکہ میں ان جرائم کی سزا بیس سال قید تک ہو سکتی ہے۔

بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ دونوں افراد کو اسٹونیا کی ایک عدالت میں پیش کر دیا گیا ہے اور انھیں امریکہ حوالگی تک اسٹونیا میں زیر حراست رکھا جائے گا۔

دونوں افراد کے وکلاء کی جانب سے فوری طور پر کوئی بیان سامنے نہیں آیا ہے۔

اس معاملے کی تفصیل بتاتے ہوئے امریکی محکمۂ انصاف کا کہنا تھا کہ ان دونوں نے سینکڑوں لوگوں کو ورغلا کر کرپٹو کرنسی کی مائنِنگ کے لیے ہیش فلیئر میں سرمایہ کاری کرائی۔

کہا جا رہا ہے کہ سنہ 2015 اور 2019 کے درمیانی عرصے میں دنیا بھر میں ہزاروں لوگوں نے ہیش فلیئر میں مجموعی طور پر نصف ارب ڈالر سے زیادہ کی سرمایہ کاری کی، لیکن  اس مائینِنگ سروس کے بارے میں لوگوں سے جو وعدے کیے گئے تھے وہ پورے نہیں ہوئے کیونکہ اس سروس میں وہ صلاحیت نہیں تھی جس کا دعویٰ کیا گیا تھا۔

 

امریکی محکمۂ انصاف کا الزام ہے کہ مائنِنگ میں سرمایہ کاری کے علاوہ متاثرین سے یہ وعدہ بھی کیا گیا تھا اگر وہ ’پولیبئس‘ نامی آن لائن بینک میں سرمایہ لگائیں گے تو انھیں اس میں بھی منافع ہو گا۔

مبینہ طور پر جرائم سے حاصل ہونے والی دولت کو دونوں نے منی لانڈرنگ کے ذریعے ایک اکاؤنٹ سے دوسرے میں منتقل کیا اور اس سے 75 مہنگی جائدادیں اور کاریں خریدیں۔

ایف بی آئی اور اسٹونیا کی پولیس کی اس مشرکہ کارروائی کے حوالےسے سائبر کرائم بیورو کے افسر، اوسکر گروز کا کہنا تھا کہ اس ’طویل اور وسیع‘ تفتیش میں کل ایک سو اہکاروں نے حصہ لیا جن میں امریکہ کی جانب سے 15 اہلکار شامل تھے۔

’ہم نے اسٹونیا میں دھوکہ دہی کی جو بڑی بڑی کارروائیاں دیکھی ہیں یہ واردات ان میں سے ایک ہے۔‘

اس موقع پر اسٹونیا کے حکام نے اس خدشے کا بھی اظہار کیا ہے کہ ٹیکنالوجی کے بڑھتے ہوئے استعمال سے فراڈ کے خطرات میں اضافہ ہو گیا ہے۔

کرپٹو کرنسی میں دھوکہ دہی کی یہ کارروائی ایک ایسے وقت  میں منظر عام پر آئی ہے جب دنیا میں کرپٹو کرنسی کے دوسرے بڑے ایکسچینج ’ایف ٹی ایکس‘ کی تباہی کے بعد کرپٹو کرنسی کی مارکیٹ میں شدید بے چینی پائی جا رہی ہے۔

ایف ٹی ایکس نامی کمپنی نے گذشتہ ہفتے ہی امریکہ میں دیوالیہ قرار دیئے جانے کی درخواست دائر کی ہے اور عدالتی دستاویزات کے مطابق کپمنی نے اپنے بڑے 50 سرمایہ کاروں کو تقریباً ایک اعشاریہ تین ارب ڈالر لوٹانے ہیں۔     

مزید خبریں

Disclaimer: Urduwire.com is only the source of Urdu Meta News (type of Google News) and display news on “as it is” based from leading Urdu news web based sources. If you are a general user or webmaster, and want to know how it works? Read More