سلیم ملک، کنیریا کی تاحیات پابندی کے خلاف درخواست مسترد

اردو نیوز  |  Jul 12, 2020

پاکستان کرکٹ بورڈ نے قومی کرکٹ ٹیم کے سابق کپتان سلیم ملک اور سپنر دانش کنیریا کی جانب سے میچ فکسنگ پر اپنے اوپر لگائے گئے تاحیات پابندی ختم کرنے اور دوسرا موقع فراہم کرنے کی استدعا مسترد کر دی۔

پی سی بی کے ایک بیان کے مطابق دانش کنیريا اور سليم ملک نے علیحدہ علیحدہ معاملات پر پاکستان کرکٹ بورڈ سے رابطہ کیا تھا۔

’دونوں کی درخواستوں کا بغور مطالعہ کرنے اور پھر ان کا جائزہ لینے کے بعد پی سی بی نے دونوں سابق کرکٹرز کو جواب دے ديا ہے۔‘

دانش کنیریا کی جانب سے تا حیات پابندی معطل کرنے اور کرکٹ بورڈ کی ’ری ہیب‘ پروگرام میں شامل ہونے کی درخواست پر پی سی بی نے جواب میں کہا ہے کہ ’آپ پر انگلینڈ اینڈ ویلز کرکٹ بورڈ کے کرکٹ ڈسپلن کميشن نے تاحیات پابندی عائد کر رکھی ہے۔ چونکہ آپ نے جانتے بوجھتے ہوئے ميرن ويسٹ فيلڈ کو ڈرہم کے ميچ ميں صلاحیتوں کے  مطابق کارکردگی  کا مظاہرہ نہ کرنے کی ترغيب دی تھی۔‘

بیان کے مطابق ’آپ نے اس فيصلے کو کرکٹ ڈسپلنری کميشن کے اپيل پينل کے سامنے چيلنج کيا جہاں اس فیصلے کو برقرار رکھا گيا۔ پھر آپ نے لندن ميں ہائی کورٹ کےکمرشل بينچ کے سامنے اپيل کی، جسے خارج کر ديا گيا۔ اس کے بعد آپ نے سول ڈویژن کی عدالت میں اپیل کی، جسے  مسترد کر ديا گيا۔‘

پی سی بی کے مطابق بحالی پروگرام کھلاڑيوں کو نااہل ہونے کے متعلقہ ادوار کے اختتام پر پيش کيا جاتا ہے، ناکہ اُن کھلاڑيوں کو جو تاحيات پابندی کا سامنا کر رہے ہوں۔

پی سی بی کی جانب سے دانش کنیریا کو مشورہ دیا گیا ہے کہ وہ اس معاملے پر ای سی بی کے اینٹی کرپشن کوڈ کی شق نمبر 6.8 کے مطابق اس معاملے پر ای سی بی سے رجوع کريں۔

سليم ملک کے حوالے سے پی سی بی کا کہنا ہے کہ وہ آئی سی سی کی جانب سے فراہم کردہ اپريل 2000 کے ٹرانسکرپٹ کا جواب دينے ميں ناکام رہے۔

پی سی بی کے مطابق سلیم ملک آئی سی سی کے ٹرانسکرپٹ کا جواب دينے ميں ناکام رہے (فوٹو: اے ایف پی) ’آپ نے اپريل 2000 ميں ہونے والی ایک گفتگو کے ٹرانسکرپٹ کے مندرجات کا جواب نہ دينے کا انتخاب کیا۔ اس پس منظر میں پی سی بی اس وقت تک مزيد کاروائی نہيں کر سکتا جب تک آپ اس معاملے پر جواب نہيں دے ديتے۔‘

بیان میں مزید کہا گیا کہ ٹرانسکرپٹ کا جواب دينے سے انکار اور اجتناب اس اعتراف کو تبدیل نہیں کر سکتا جو آپ نے 5 مئی 2014 کو اُس وقت کے چيرمين پی سی بی کے نام لکھے اپنے ایک خط میں کیا تھا۔

مزید خبریں

Disclaimer: Urduwire.com is only the source of Urdu Meta News (type of Google News) and display news on “as it is” based from leading Urdu news web based sources. If you are a general user or webmaster, and want to know how it works? Read More