امریکی گلوکارہ جینیفر لوپیز اور ایلکس روڈریگز نے راہیں جدا کر لیں

وائس آف امریکہ اردو  |  Apr 19, 2021

ویب ڈیسک — 

معروف امریکی اداکارہ و گلوکارہ جینیفر لوپیز اور سابق امریکی بیس بال کھلاڑی ایلکس روڈریگز نے جمعرات کو اپنی منگنی ختم کرنے کا اعلان کیا ہے۔

جینیفر لوپیز اور ان کے پارٹنر نے منگنی ختم کرنے کا اعلان ایک مشترکہ بیان میں کیا ہے۔

بیان میں کہا گیا ہے کہ "ہم دوست کی حیثیت سے زیادہ بہتر ہیں اور آگے بھی ایسے ہی رہیں گے۔"

اُن کا کہنا تھا کہ ہم مل کر کام کرتے رہیں گے اور اپنے مشترکہ کاروبار اور منصوبوں میں ایک دوسرے کی مدد بھی کریں گے۔

مشترکہ بیان میں گلوکارہ جینیفر لوپیز اور ایلکس روڈزیگر کا کہنا تھا کہ "ہم ایک دوسرے اور ایک دوسرے کے بچوں کے لیے نیک خواہشات رکھتے ہیں۔"

علاوہ ازیں انہوں نے ان تمام افراد کا شکریہ بھی ادا کیا جنہوں نے ان کی حمایت کرنے کے ساتھ ساتھ ان کے لیے نیک تمناؤں کا اظہار کیا تھا۔

یاد رہے کہ رواں برس مارچ میں جینیفر لوپیز اور ایلکس روڈزیگر کے حوالے سے متعدد ویب سائٹس کی جانب سے دعویٰ کیا جا رہا تھا کہ دونوں نے منگنی ختم کر دی ہے۔

بعد ازاں جنیفر اور ایلکس نے ایک دوسرے سے راہیں جدا کرنے کی خبروں کی تردید کرتے ہوئے کہا تھا وہ کچھ چیزوں پر کام کر رہے ہیں۔

امریکی گلوکارہ اور سابق بیس بال کھلاڑی کے درمیان 2017 میں تعلقات کا آغاز ہوا تھا جس کے بعد جوڑے نے مارچ 2019 میں منگنی کا اعلان کیا تھا۔

رواں برس جنوری میں امریکی صدر جو بائیڈن کی حلف برداری کی تقریب میں پرفارم کرنے والی گلوکارہ جینیفر لوپیز نے گزشتہ برس کے آخر میں کہا تھا کہ انہوں نے کرونا وبا کی وجہ سے دو مرتبہ اپنی شادی ملتوی کر دی تھی۔

یاد رہے کہ جینیفر لوپیز نے 22 فروری 1997 میں اداکار اوجنی نوا سے شادی کی تھی جو کہ ایک برس سے کم عرصے میں ہی ختم ہو گئی تھی اور جوڑے نے جنوری 1998 میں علیحدگی اختیار کر لی تھی۔

SEE ALSO:ٹیلر سوئفٹ، سب سے زیادہ کمانے والی گلوکارہ قرار

بعدازاں جینیفر لوپیز نے 2001 میں امریکی اداکار کرس جَڈ سے دوسری شادی کی تھی۔ یہ شادی بھی زیادہ عرصہ نہ رہ سکی اور جوڑے نے 2003 میں الگ ہونے کا فیصلہ کیا۔

امریکی اداکارہ نے 2004 میں گلوکار و اداکار مارک اینتھونی سے تیسری شادی کی جن سے ان کے جڑواں بچے بھی ہیں۔

جینیفر اور گلوکار مارک اینتھونی نے 2014 میں ایک دوسرے سے راہیں جدا کرلی تھیں۔

مزید خبریں

Disclaimer: Urduwire.com is only the source of Urdu Meta News (type of Google News) and display news on “as it is” based from leading Urdu news web based sources. If you are a general user or webmaster, and want to know how it works? Read More