چاہتا ہوں صوبے کے ہر شہری کو ویکسین لگے، وزیراعلیٰ سندھ

بول نیوز  |  May 04, 2021

وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ نے کہا ہے کہ چاہتا ہوں صوبے کے ہر شہری کو ویکسین لگے۔

تفصیلات کے مطابق وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ کی صوبے کے اہم ڈاکٹرز سے ملاقات ہوئی۔

وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ نے کہا کہ ڈاکٹرز سے ملاقات کا مقصد کورونا وائرس کی صورتحال کا جائزہ لینے اور کنٹرول کرنا ہے، آپ تمام ڈاکٹرز کی رہنمائی اور معاونت کی ضرورت ہے۔

وزیراعلیٰ سندھ نے کہا کہ ہمیں ہر حال میں رضاکارانہ طور پر ایک دوسرے کا خیال رکھنا ہے، چاہتا ہوں صوبے کے ہر شہری کو ویکسین لگے۔

سید مراد علی شاہ نے یہ بھی کہا کہ صورتحال انتہائی خطرناک ہے، کراچی میں 12.87 فیصد ، حیدرآباد 18.02 فیصد، سکھر 6.85 فیصد کورونا کے کیسز ہوگئے ہیں۔

وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ نے مزید کہا کہ ہمارے اسپتالوں میں آکسیجن کا مکمل انتظام ہونا چاہیے، اگر مریض کو آکسیجن بر وقت لگ جائے تو وینٹی لیٹرز پر جانے کی ضرورت نہیں ہوگی۔

ملاقات میں ڈاکٹر قیصر نے وزیراعلیٰ سندھ کے اقدامات کو سراہا۔

ڈاکٹر قیصر نے کہا کہ یہ افسوس کی بات ہے کہ کورونا سیاست کی نظر ہو رہا ہے، جس کا نقصان ہوگا۔

ملاقات میں ڈاکٹر قیصر نے مزید کہا کہ ٹرانسپورٹ پر پابندی اچھا اقدام ہے، ایس او پیز پر مزید عملددرآمد کرنے کیلئے اقدامات کرنے چاہیے۔

اس موقع پر ڈاکٹر اظہر نے کہا کہ ڈاکٹرز کو سندھ حکومت نے کورونا ایمرجنسی میں بھرتی کیا ہے وہ اچھا اقدام ہے، جو نئے ڈاکٹرز بھرتی کئے گئے ہیں انکی تنخواہیں فوری دی جائیں تاکہ انکا جذبہ قائم رہے۔

ڈاکٹر سیمی جمالی نے کہا کہ سندھ حکومت کورونا وائرس پر اچھا کام کر رہی ہے، سندھ حکومت کو بروقت اقدام کرنے پر مبارکباد دیتی ہوں۔

وزیر صحت سندھ نے کہا کہ محکمہ صحت میں مرکزی سسٹم قائم ہے، اسپتالوں کے مریضوں کو جہاں بستر دستیاب ہوتے ہیں انکو گائیڈ کرتے ہیں۔

ملاقات میں وزیر صحت، وزیر بلدیات، مشیر قانون، چیف سیکریٹری، سیکریٹری صحت، ڈاکتر باری، ڈاکٹر فیصل، وائس چانسلر ڈاکتر سعید قریشی، ای ڈی جے پی ایم سی ڈاکٹر سیمی جمالی، ڈاکٹر نصرت شاہ، ڈاکٹر قیصر سجاد، ڈاکٹر غفار شورو، ڈاکٹر شریف ہاشمی، ڈاکٹر قاضی واصف، ڈاکٹر انوپ، ڈاکٹر شبیر اور دیگر نے شرکت کی۔

--> Double Click 970 x 90
مزید خبریں

Disclaimer: Urduwire.com is only the source of Urdu Meta News (type of Google News) and display news on “as it is” based from leading Urdu news web based sources. If you are a general user or webmaster, and want to know how it works? Read More