والٹن کنٹونمنٹ بورڈ:ریٹائرڈمیجرکی درخواست مسترد،پی ٹی آئی امیدوار کی منظور

سماء نیوز  |  Sep 15, 2021

فوٹو: لاہور ہائیکورٹ ویب سائٹ

والٹن کنٹونمنٹ بورڈ کے وارڈ نمبر5 کے انتخابی نتائج رکوانے کے لیے میجر ریٹائرڈ جاوید ضمیر کی درخواست لاہور ہائیکورٹ نے ناقابل سماعت قرار دے دی۔

جسٹس شمس محمود مرزا نے درخواست ناقابل سماعت قرار دے کر مسترد کر دی۔ عدالت نے حکم دیا کہ انتخابی نتائج کا اعلان ہو چکا ہے اس لیے متعلقہ فورم سے رجوع کریں۔

درخواست گزار کے مطابق کنٹونمنٹ بورڈ الیکشن وارڈ نمبر 5 میں صرف 12 ووٹوں سے شکست ہوئی، مسترد ہونے والے ووٹوں کی تعداد ہارے جانے والے ووٹوں سے زیادہ ہے۔

درخواست گزار نے مؤقف اپنایا تھا کہ ریٹرننگ افسر نے بدنیتی اور بد دیانتی سے نتیجہ کا اعلان کیا جبکہ الیکشن شیڈول کے مطابق ریٹرننگ افسر 17 کو نتائج جاری کرنے کا مجاز تھا، ریٹرننگ افسر کو دوبارہ گنتی کی درخواست دی جو مسترد کردی گئی۔

درخواست میں استدعا کی گئی تھی کہ عدالت وارڈ کے نتائج روکنے اور دوبارہ گنتی کرنے کا حکم دے۔

پی ٹی آئی امیدوار

اسی طرح کی ایک اور درخواست پر لاہور ہائیکورٹ نے والٹن کنٹونمنٹ بورڈ کے وارڈ نمبر4 سے تحریک انصاف کے امیدوار اسلم جٹ کے نتائج روکنے اور دوبارہ گنتی کی درخواست منظور کرلی۔

جسٹس جواد حسن نے 21 ووٹوں کے فرق سے ہارنے والے امیدوار کی درخواست پر سماعت کی۔ عدالت نے نتائج التوا میں رکھنے کا حکم دیتے ہوئے درخواست گزار کو سن کر قانون کے مطابق فیصلہ کرنے کا حکم دیا۔

درخواست گزار کی جانب سے ایڈووکیٹ وقار طور نے دلائل دیے۔

ایڈووکیٹ وقار طور نے موقف اپنایا کہ اسلم جٹ 27 ووٹوں سے ہارے جبکہ مسترد شدہ ووٹوں کے گنتی میں مارجن 21 رہ گیا ہے، کل 68 ووٹ مسترد ہوئے جو ہارے جانے والے ووٹوں سے زیادہ ہیں۔ ریٹرننگ افسر کو دوبارہ گنتی کی درخواست دی جو مسترد کردی۔

ایڈووکیٹ وقار طور نے عدالت سے استدعا کی کہ عدالت ریٹرنگ افسر کو دوبارہ گنتی اور حتمی انتخابی نتیجہ روکنے کا حکم دے۔

والٹن کنٹونمنٹ بورڈ کے وارڈ نمبر 4 اور 5 سے مسلم لیگ ن کے امیدوار کامیاب ہوئے تھے۔

ایک درخوست مسترد، دوسری منظور کیوں ہوئی؟

واضح رہے کہ درخواست گزار میجر ریٹائرڈ جاوید ضمیر نے انتخابات والے روز ریٹرننگ افسر (آر او) دفتر میں بیٹھ کر فارم 45 پر دستخط کیے تھے جس کی وجہ سے عدالت نے درخواست ناقابل سماعت قرار دے کر مسترد کی۔

دوسری طرف پی ٹی آئی امیدوار اسلم جٹ نے فارم 45 پر دستخط نہیں کیے تھے جس کے باعث عدالت نے نتائج التوا میں رکھنے کا حکم دیتے ہوئے دوبارہ گنتی کی درخواست منظور کی۔

فارم 45 پر دستخط کرنے کا مطلب یہ ہوتا ہے کہ متعلقہ امیدوار کو انتخابات کے نتائج قبول ہیں۔

مزید خبریں

Disclaimer: Urduwire.com is only the source of Urdu Meta News (type of Google News) and display news on “as it is” based from leading Urdu news web based sources. If you are a general user or webmaster, and want to know how it works? Read More