زوم کال پر ایک ساتھ 900 ملازمین فارغ

سماء نیوز  |  Dec 07, 2021

امریکا میں قرض فراہم کرنے والی فرم کے مالک نے ایک جھٹکے میں 900 ملازمین کو فارغ کردیا۔

امریکی نشریاتی ادارے سی این این کی رپورٹ کے مطابق زوم کال میٹنگ کی، جس کی وڈیو کا ایک کلپ یو ٹیوب اور دیگر سوشل میڈیا پلیٹ فارمز پر وائرل ہو چکا ہے۔

اس وائرل ویڈیو میں فرم کے مالک وشال گرگ کمپنی ملازمین کو کہتے ہوئے دیکھے جا سکتا ہے کہ اگر آپ اس کال میں موجود ہیں تو آپ اس بدقسمت گروہ کا حصہ ہیں جو اپنی ملازمت کھو رہا ہے۔ مارکیٹ تبدیل ہوچکی ہے، اس لیے کمپنی کے آپریشنز کو جاری رکھنے کے لئے برطرفیاں نا گزیر ہیں۔

وشال گرگ نے ملازمین سے کہا کہ یقیناً یہ ایسی خبر نہیں جو آپ سننا چاہتے ہوں، مگر چونکہ یہ میرا فیصلہ تھا اسی لئے میں خود آپ سے یہ بات کہنا چاہتا تھا۔ یہ خود میرے لئے بہت مشکل لمحہ ہے جو میری زندگی میں آج دوسری مرتبہ آیا ہے۔ میں یہ ہرگز نہیں کرنا چاہتا، جب مجھے پہلی بار ایسا کرنا پڑا تھا تو میں رویا تھا۔ اس بار میں مضبوط رہنے کی کوشش کرونگا۔

کمپنی کی افرادی قوت میں 15 فیصد کٹوتی پر ان کا کہنا تھا کہ یہ مارکیٹ کی ضروریات، پیداوار اور پرفارمنس کو مد نظر رکھتے ہوئے کی گئی ہے۔ تاہم، اخبار ‘نیو یارک پوسٹ’ کے مطابق، کمپنی کو حال ہی میں 750 ملین ڈالرز کی سرمایہ کاری ملی ہے۔

نیوز ویب سائٹ، فورچون نے پروفیشنل نیٹ ورک پر ایسے کئی گمنام پیغامات کو وشال گرگ سے منسوب کیا ہے، جس میں انہوں نے کمپنی کے ملازمین پر کام چوری کا الزام عائد کیا۔ ان کے مطابق ملازمین 8 گھنٹے کا کام دکھا کر محض 2 گھنٹے کام کر رہے تھے۔

فورچون کے استفسار پر وشال گرگ نے بتایا کہ کچھ عرصہ پہلے ملازمین کی پرفارمنس کے جائزے میں یہ باتیں سامنے آئیں، ملازمین کلائنٹس کے ساتھ میٹنگز میں تاخیر سے پہنچ رہے تھے، فون کالز‮‏ ‫اٹھانے میں تاخیر دکھا رہے تھے اور کلائنٹس حاصل کرنے کے لئے بھی ان کی پرفارمنس سست تھی۔ وشال کا کہنا ہے کی یہ کسی طرح بددیانتی اور چوری سے کم نہیں۔

فورچون کے مطابق وشال گرگ نے اس کے بعد رہ جانے ملازمین سے بھی سخت لہجے میں بات کرتے ہوئے ان کی کارکردگی پر سخت نظر رکھنے کا عندیہ دیا۔ ملازمین کے مطابق وشال کا لہجہ دھمکی دینے جیسا تھا اور وہ ہمیشہ سے ہی سخت باس رہے ہیں جو ذرا ذرا سے غلطیوں پر سرزنش کرتے ہیں۔

گزشتہ سال کی ایک ای میل میں انہوں نے مبینہ طور پر کمپنی ملازمین کو سست ڈولفنز قرار دیتے ہوئے کہا تھا کہ ایسی مچھلیوں کو شارکس کھا جاتی ہیں، اس سلسلے کو یہیں روکیں اور مجھے مزید شرمندہ نہ کریں۔

مزید خبریں

Disclaimer: Urduwire.com is only the source of Urdu Meta News (type of Google News) and display news on “as it is” based from leading Urdu news web based sources. If you are a general user or webmaster, and want to know how it works? Read More