سینٹورس شاپنگ مال ایک دن کی بندش کے بعد کھول دیا گیا، ’بیسمنٹ بند رہے گی‘

بی بی سی اردو  |  Dec 06, 2022

Getty Images

وزیر اعظم پاکستان شہباز شریف سے پاکستان کے زیرِ انتظام  کشمیر کے  وزیر اعظم تنویر الیاس کی تکرار کےبعد اسلام آباد میں سینٹورس شاپنگ مال کو بند کیے جانے کے چوبیس گھنٹوں کے اندر ہی کھول دیا گیا ہے۔

البتہ کیپٹل ڈویلپمنٹ اتھارٹی کے ترجمان کا کہنا ہے کہ عمارت کی بیسمنٹ کے غیر قانونی استعمال کرنے کی وجہ بند رہے گی۔

کیپیٹل ڈیویلپمنٹ اتھارٹی (سی ڈی اے) نے گزشتہ رات کو سینٹورس مال کوسِیل کردیاتھا۔ بی بی سی سے بات کرتے ہوئے سی ڈی اے کے ترجمان نے بلڈنگ کو 5 دسمبر کی رات کو بند کرنے کی تصدیق کرتے ہوئے کہا تھا کہ اس کو سیل کرنے کی وجہ ’بلڈنگ کا غیر قانونی استعمال بتایا تھا۔‘

ترجمان نے بتایا تھا کہ ’بیسمنٹ میں جہاں پارکنگ ہونی چاہیے وہاں بینک بنے ہوئے ہیں۔‘

سینٹورس شاپنگ مال پاکستان کے زیر انتظام کشمیر کے وزیر اعظم سردار تنویر الیاس کی ملکیت ہے۔سردار تنویر الیاس کا تعلق پاکستان تحریک انصاف ہے۔

سی ڈی اے کی جانب سے شاپنگ مال کو بند کیے جانے کے بعدلوگوں نے احتجاج کیا اور جناح ایونیو کو کچھ دیر کے لیے بند کر دیا تھا۔احتجاج کرنے میں اکثریت ایسے لوگوں کی تھی جو سینٹورس میں کام کر تے ہیں۔

ہولیس کی بھاری نفری نے موقع پر پہنچ کر جناح ایوینو کو کھلوا دیا تھا۔

بی بی سی کی نامہ کو بتایا گیا تھا کہ شاپنگ مال کی صرف دکانوں کو بند کیا گیا اور بلڈنگ کےاپارٹمنٹس میں رہایش پذیر افرادکے لیےایف ایٹ کی جانب سے راستہ کھولا گیا ہے جہاں سے وہ آ جا سکتے تھے۔

’کشمیر کی قربانیوں کے سوال پر سینٹورس مال بند کیا گیا‘

دوسری جانب پاکستان تحریکِ انصاف کے سربراہ عمران خان نے وزیرِ اعظم شہباز شریف پر الزام لگایا تھاکہ ’کشمیر کے لوگوں کی قربانیوں پر سوال پوچھنے پر سینٹورس کو سِیل کردیا گیا۔‘

عمران خان کے الزام لگانے کی وجہ ایک روز پہلے ہونے والا واقعہ ہے۔

تکرار کی وجہ

منگلا میں ہائیڈرو پاور پلانٹ کی افتتاحی تقریب میں وزیرِ اعظم شہباز شریف کی تقریر کے دوران سردار تنویر الیاس نے انھیں ٹوکا۔ سردار تنویر الیاس پاکستان کے زیرِ انتظام کشمیر کے وزیرِ اعظم ہیں اور پاکستان تحریکِ انصاف کے رکن بھی۔

انھوں نے شہباز شریف کو کہا کہ آپ کشمیر کی قربانیاں نہیں گنوا رہے ہیں۔ جس پر انھیں شہباز شریف نے کہا کہ ’پلیز میری بات سنیں۔ آپ بیٹھ جائیں۔ میں آپ سے بات کروں گا۔‘

اس چپقلش کے کچھ دیر بعد وزیرِ اعظم شہباز شریف سٹیج چھوڑ کر چلے گئے۔ اس واقعے کے بعد رات دیر گئے سی ڈی نے سینٹورس مال کو سِیل کردیا۔

تنویر الیاس سینٹورس مال کے مالک ہیں۔ جس کے بعد سے ان دونوں واقعات کو سیاستدانوں کی طرف سے جوڑا جارہا ہے۔ اور اب عمران خان نے الزام عائد کیا ہے کہ ان کو وزیرِ اعظم سے سوال کرنے پر سزا دی گئی ہے اور مال کو سِیل کردیا گیا ہے۔

https://twitter.com/ImranKhanPTI/status/1600016361933230080

سی ڈی اے کا موقف

جبکہ سی ڈی اے نے 2019 سے لے کر 2022 تک کے نوٹس اور اعتراضات کی فہرست بی بی سی سے شیئر کرتے ہوئے بتایا کہ ’تجاوزات اور غیر قانونی استعمال کا معاملہ پچھلے دو سال سے جاری رہا جس پر کئی بار سینٹورس مالکان کو آرڈر کے ذریعے مطلع کیا جاتا رہا۔‘

پاکستان کے زیرانتظام کشمیر کے دارلحکومت مظفرآباد میں پی ٹی آئی کے کارکنان کا وزیراعظم پاکستان  کے خلاف احتجاجی مظاہرہ ۔مظاہرین کا مطالبہ ہے کہ میرپور میں شہباز شریف کی جانب سے اس خطے کے وزیراعظم تنویر الیاس خان کے ساتھ  ناروا سلوک پر شہباز شریف کشمیری قوم سے معافی مانگیں۔ مظاہرین نے مرکزی ایوان صحافت کے باہرٹائروں کو آگ لگا کر مرکزی شاہراہ کو بند کر دیا۔

مزید خبریں

Disclaimer: Urduwire.com is only the source of Urdu Meta News (type of Google News) and display news on “as it is” based from leading Urdu news web based sources. If you are a general user or webmaster, and want to know how it works? Read More