اپوزیشن آج جسطرح پشاور سے رسوا اور ناکام ہو کر نکلی ہے آگے بھی ان کا یہی انجام ہو گا،سینیٹر شبلی فراز

اے پی پی  |  Nov 23, 2020

اسلام آباد۔22نومبر (اے پی پی):وفاقی وزیر اطلاعات و نشریات سینیٹر شبلی فراز نے کہا ہے کہ جمعیت علمائے اسلام (جے یو آئی۔ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمان نے گزشتہ سال مارچ کا حکومت کو وقت دیا تھا، اب جنوری کی بات کر رہے ہیں اور آگے بھی اسی طرح تاریخیں دیتے رہیں گے، اپوزیشن آج جسطرح پشاور سے رسوا اور ناکام ہو کر نکلی ہے آگے بھی ان کا یہی انجام ہو گا، اپوزیشن اپنے بدعنوان قائدین کو نیب کیسز سے ریلیف دلوانے کیلئے ریاستی اداروں کو دھمکیاں دے کر حکومت پر دبائو ڈالنا چاہتی ہیں لیکن حکومت دبائومیں نہیں آئے گی اور ان لوگوں کو کسی صورت میں این آر او نہیں دیا جائے گا، جس دن بدعنوان قائدین کو این آر او دے دیا تو یہ ہماری جماعت کا خاتمہ ہو گا۔ اتوار کو نجی ٹی وی چینل کے پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ اپوزیشن ذاتی ایجنڈے پر عمل پیرا ہے ان لوگوں کا عوام اور ملک کے مفاد سے کوئی تعلق نہیں ہے، یہ ہر جلسے میں بے نقاب ہوتے جا رہے ہیں اور اب لوگوں کو بھی پتا چل گیا ہے کہ ان کی اصل منشا کیا ہے۔ شبلی فراز نے کہا کہ اپوزیشن جماعتوں نے سیاسی فوائد کے حصول اور ذاتی مفادات کو تحفظ دینے کیلئے اپنے جلسوں میں اداروں کو نشانہ بنایا اور انہیں چیلنج کیا لیکن یہ لوگ کبھی اپنے مذموم سیاسی مقاصد حاصل کرنے میں کامیاب نہیں ہوں گے۔ انہوں نے کہا کہ سابقہ حکومتوں نے نیب چیئرمین کی تعیناتی کی اور انہوں نے اپنے ادوار میں ایک دوسرے کے خلاف کیسز بنائے، اگر ہماری اداروں میں مداخلت ہوتی تو اپوزیشن کے بدعنوان قائدین کے کیسز اب تک پایہ تکمیل تک پہنچ چکے ہوتے۔ وفاقی وزیر نے کہا کہ پانامہ اسکینڈل کے بعد ملک کی تاریخ بدل گئی ہے، سابق حکمرانوں نے ذات کو فائدہ دینے کیلئے ملک کے وسائل کو لوٹا، یہ لوگ پہلے اداروں کو غیرفعال کرتے اور پھر ان سے فائدے اٹھاتے تھے تاہم موجودہ حکومت نے کرپشن کے ایشو کو سنجیدگی سے لیا ہے اور ملک سے کرپشن کی لعنت کے خاتمے کیلئے پر عزم ہیں۔ انہوں نے کہا کہ وزیراعظم عمران خان کا کوئی کاروبار ہے اور نہ ہی وہ ذاتی فوائد اٹھاتے ہیں، ان کی تمام تر توجہ ملک کو آگے لیکر جانے پر مرکوز ہے، اگر کسی کے پاس کابینہ کے ارکان کے خلاف کرپشن کے ثبوت ہیں تو سامنے لائیں۔ شبلی فراز نے کہا کہ عوام کی جان و مال اور معیشت کا تحفظ حکومت کی ذمہ داری ہے، حکومت نے اسی کے پیش نظر اپنی سیاسی سرگرمیاں معطل کیں، اپوزیشن کو بھی چاہیے کہ وہ جلسے جلوس موخر کرے۔ انہوں نے کہا کہ بلاول بھٹو پشاور جلسے میں 2018ءوالی تقریر کر رہے تھے، انہیں کچھ پتا ہی نہیں کہ فاٹا میں ترقیاتی منصوبوں پر کام شروع ہو چکا ہے۔

مزید خبریں

Disclaimer: Urduwire.com is only the source of Urdu Meta News (type of Google News) and display news on “as it is” based from leading Urdu news web based sources. If you are a general user or webmaster, and want to know how it works? Read More