تیلنگانہ الیکشن: جناح، سرجیکل سٹرائیک اور چین کی گونج

اردو نیوز  |  Nov 25, 2020

انڈیا کی وسطی ریاست تیلنگانہ کے دارالحکومت حیدرآباد کے میونسپل انتخابات میں پاکستان، چین، محمد علی جناح، سرجیکل سٹرائیک اور روہنگیا مسلمانوں کی گونج سنائی دے رہی ہے۔

تیلنگانہ میں ایک طرف مرکز میں حکمراں جماعت بی جے پی اپنی پوزیشن مضبوط کرنا چاہتی ہے تو ریاست میں حکمراں جماعات تیلنگانہ راشٹریہ سمیتی (ٹی آر ایس) اپنے اقتدار کو برقرار رکھنا چاہتی ہے۔

جبکہ پارلیمان میں اسدالدین اویسی کی پارٹی آل انڈیا مجلس اتحاد المسلمین (اے آئی ایم ائی ایم) بہار کے ریاستی انتخابات میں پانچ سیٹ جیتنے کے بعد اپنی ریاست میں خود کو مزید مضبوط کرنا چاہتی ہے۔

بی جے پی کے رہنما اور مرکزی وزیر برائے اطلاعات و نشریات اور ماحولیات پرکاش جاوڑیکر نے ٹی آر ایس کو اپنے وعدے پورے نہ کرنے کے لیے شدید تنقید کا نشانہ بنایا تھا اور اس کے خلاف چارج شیٹ یعنی الزامات کی فہرست جاری کی تھی  تو وہیں بی جے پی کے رہنما اور رکن پارلیمان تیجسوی سوریا نے اسدالدین اویسی کو پاکستان کے بانی اور قائد اعظم محمد علی جناح کا 'اوتار' قرار دیا ہے۔

انھوں نے یہ بھی کہا ہے کہ 'ان کی پارٹی اے آئی ایم ائی ایم کو دی جانے والے ایک ایک ووٹ انڈیا کے خلاف ووٹ ہوگا۔'

انھوں نے اویسی پر سخت گیر اسلام، علیحدگی پسندی اور انتہا پسندی کی زبان استعمال کرنے کے الزامات لگائے۔

واضح رہے کہ حیدرآباد کے میونسپل انتخابات کے لیے ووٹنگ یکم دسمبر کو ہوگی جبکہ نتائج کا اعلان چار دسمبر کو کیا جائے گا۔

مسٹر سوریا نے اسدالدین اویسی اور اکبرالدین اویسی کا مذاق اڑاتے ہوئے کہا کہ 'وہ ترقی کی باتیں کرتے ہیں۔

Some context for people outside Hyderabad: in the ongoing MUNICIPAL polls, BJP has promised a SURGICAL STRIKE against the people of Hyderabad if they win

They don't show this bravado in Ladakh, where China has occupied Indian territory pic.twitter.com/kyfhKGMMuE

— Asaduddin Owaisi (@asadowaisi) November 24, 2020

انھوں نے پرانے حیدرآباد کی ترقی نہیں ہونے دی۔ انھوں نے صرف ایک چیز ہونے دی وہ روہنگیا مسلمانوں کو وہاں آنے کی اجازت دی۔'

کے چندرشیکھر راؤ نے بی جے پی پر فرقہ وارانہ منافرت پھیلانے اور مسائل پیدا کرنے کا الزام لگایا ہے۔

تیجسوی سوریا کے بیان کے بعد تیلنگانہ میں بی جے پی کے سربراہ بندی سنجے نے کہا کہ بی جے پی کی جیت کی صورت میں وہ پرانے حیدرآباد میں 'سرجیکل سٹرائیک' کریں گے۔

اس کے جواب میں اسدالدین اویسی نے ایک مجمع سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ 'انھوں نے حیدرآباد میں سرجیکل سٹرائیک کی بات کی ہے۔ ان میں ہمت ہے تو لداخ میں چین پر سرجیکل سٹرائیک کریں جہاں چین نے انڈین علاقوں پر قبضہ کر رکھا ہے۔‘

انھوں نے انڈین وزیر اعظم نریندر مودی کا نام لے کہا کہ 'کیوں خاموش بیٹھے ہیں، وہاں سرجیکل سٹرائیک کریں، آپ چین کا نام لینے سے ڈرتے ہیں؟ آپ سرجیکل سٹرائک کریں ہم آپ کی تائید کریں گے۔'

مزید خبریں

Disclaimer: Urduwire.com is only the source of Urdu Meta News (type of Google News) and display news on “as it is” based from leading Urdu news web based sources. If you are a general user or webmaster, and want to know how it works? Read More