ایران میں پانی کے بحران کے خلاف مظاہروں کے دوران پولیس آفیسر ہلاک

اردو نیوز  |  Jul 21, 2021

ایران کے جنوب مغربی علاقے میں پانی کے بحران پر جاری مظاہروں کے دوران ایک ایرانی پولیس آفیسر ہلاک ہو گیا ہے۔

امریکی خبر رساں ادارے اے پی نے سرکاری ذرائع ابلاع کے حوالے سے کہا ہے کہ حالیہ مظاہروں میں اب تک دو ہلاکتیں ہو چکی ہیں۔

ایران کے سرکاری خبر رساں ادارے ارنا کے مطابق ماھشھر کے شہر میں فائرنگ سے ایک پولیس آفیسر ہلاک جب کہ دوسرا ٹانگ میں گولی لگنے سے زخمی ہوگیا ہے۔

رپورٹ کے مطابق ’بلوائیوں‘ کو پولیس  آفیسر کے قتل کے ذمہ دار ٹھرایا گیا ہے۔

خیال رہے تیل سے مالامال خوزستان صوبے میں گذشتہ چھ دنوں سے مسلسل مظاہرے ہورہے ہیں۔ اس صوبے کی عرب آبادی کو ایران کے شیعہ مذہبی حکومت سے امتیازی سلوک کی شکایت ہے۔

حالیہ دنوں میں پانی کے بحران پر ایران میں مظاہرے ہوئے ہیں۔ ایران کے کئی علاقوں میں گذشتہ کئی ہفتوں سے پانی کی قلت ہے اور حکام اس کی وجہ شدید خشک سالی بتاتے ہیں۔

’ہیومن رائٹس ایکٹوسٹ ان ایران‘ نامی گروپ کے مطابق خوزستان صوبے میں 50 لاکھ ایرانیوں کو صاف پانی تک رسائی حاصل نہیں۔ ایران لوگوں کے پانی تک رسائی کے حق کی حفاظت کرنے، پورا کرنے اور اس حق کا احترام کرنے میں ناکام ہو رہا ہے۔‘

خوزستان صوبے میں مظاہرے ایک ایسے وقت میں ہورہے ہیں جب ایران کورونا وبا کی مسلسل آنے والی لہروں سے نبرد آزما ہے اور ملک کی تیل کی صنعت سے وابستہ ہزاروں کارکنان بہتر تنخواہوں اور سہولیات کے لیے ہڑتالیں کر رہے ہیں۔

مزید خبریں

Disclaimer: Urduwire.com is only the source of Urdu Meta News (type of Google News) and display news on “as it is” based from leading Urdu news web based sources. If you are a general user or webmaster, and want to know how it works? Read More