کام کے بدلے خوراک:بیروزگاری کے خاتمےکیلئے طالبان کاانوکھا منصوبہ

سماء نیوز  |  Oct 25, 2021

خراب معاشی صورتحال اور بے روزگاری میں اضافے کے بعد طالبان حکومت نے کام کے بدلے خوراک پروگرام کا آغاز کردیا جس کا مقصد ملک میں لوگوں کی عزت نفس متاثر کیے بغیر بھوک و افلاس میں کمی لانا ہے۔

طالبان ترجمان نے اتوار کو کابل میں ایک تقریب سے خطاب میں کہا کہ کہ پروگرام میں شریک لوگوں کو محنت کرنی ہوگی اور یہ پروگرام بے روزگاری کے خلاف جنگ میں ایک اہم قدم ہے۔

افغان میڈیا کے مطابق 2 ماہ پر مشتمل پروگرام کے دوران 11 ہزار ٹن گندم دارالحکومت اور مزید 5 ہزار ٹن ملک کے دیگر حصوں بشمول ہرات، جلال آباد ، قندھار، مزار شریف اور پل خمری کو فراہم کی جائے گی۔

ذبیح اللہ مجاہد نے کابل میں اتوار کو کام کے بدلے خوراک کے پروگارم کا افتتاح کیا۔ اس موقعے پر وزیر زراعت عبدالرحمان رشید، کابل کے میئر حمداللہ نعمانی اور دیگر عہدیدار بھی موجود تھے۔

کابل میں اس پروگرام سے مستفید ہونے والوں میں وہ کارکن بھی شامل ہوں گے جو پانی کے ذخائر بناتے ہیں اور خشک سالی سے نمٹنے کے لیے پہاڑیوں پر برف اور بارش کے لیے نہریں کھودتے ہیں۔

مزید خبریں

Disclaimer: Urduwire.com is only the source of Urdu Meta News (type of Google News) and display news on “as it is” based from leading Urdu news web based sources. If you are a general user or webmaster, and want to know how it works? Read More