بھارتی گلوکارشیری مان کی پاکستانی لڑکی سے شادی

سماء نیوز  |  Dec 01, 2021

بھارتی پلے بیک سنگراورموسیقارشیری مان ( سریندر سنگھ مان ) نے اپنے فالوورزکو خوشخبری سنائی ہے کہ انہوں نے پاکستانی لڑکی سے شادی کرلی ہے۔

انسٹاگرام پراہلیہ کے ساتھ تصویر شیئرکرنے والے شیری مان نے کیپشن میں اپنے جذبات کااظہار کرتے ہوئے لکھا، ‘ تمہاری آنکھیں میرے شراب چھوڑنے کا سبب ہیں۔ لو یو پری زاد، میں ہمیشہ کیلئے تمہارا مان ہوں ‘۔

A post shared by Sharry Mann (@sharrymaan)

انستااسٹوریزمیں پری زاد نامی اہلیہ سے محبت کا بھرپور اظہار کرتے ہوئے شیری مان نے پنجابی زبان میں اپنے پرستاروں پرواضح کرتے ہوئے لکھا، ‘میری اہلیہ کو شراب سے سخت نفرت ہے، اس لیے اب مجھے معاف ہی رکھا جائے۔ اب اگروہ مجھے پینے سے روکے تو میرے ساتھ انصاف کرنا’۔

شیری مان کے مطابق انہوں نے سوچ لیا ہے کہ جیسے بیگم کہے گی ویسا ہی کریں گے ورنہ مشکل ہوجائے گی۔

پنجابی زبان میں گلوکاری کرنے والے شیری مان نے اسی زبان میں ایک اور پوسٹ میں لکھا، ‘ اس وقت اگر کسی ملک نے دوسرے پر حملہ کرنا ہے تو مجھے بلا لو کیونکہ جٹ کو جو ملنا تھا وہ مل گیا۔ اب سب ہلا دیں گے کیونکہ جو مجھے ملا ہے اس سے بڑھ کرکچھ بھی نہیں’ ۔ اب جو زندگی گزرے وہ آپ کی بھابھی کے ساتھ

اہلیہ کیلئے شدید محبت کا اظہاریہیں ختم نہیں ہوتا، گلوکارنے اپنے مداحوں کیلئے نیک خواہشات کا اظہارکرتے ہوئے کہا کہ بیگم ان کی حد سے زیادہ خدمت کرتی ہیں، خدا سب کو ایسی ہی گھروالی دے۔

پوسٹ کے اختتام پربھارتی موسیقارنے لکھا ، ‘آپ کی بھابھی کیلئے، پاکستان زندہ باد’۔

انسٹاگرام پر شیری مان کے مداحوں نے انہیں مبارکباد دیتے ہوئے نیک خواہشات کااظہار کیا تاہم بیشتر ایسے بھی تھے جنہوں نے گلوکار کی اہلیہ کے پاکستانی ہونے پرحیرت کااظہار کرتے ہوئے تجسس کا اظہار کیا۔

مداحوں کے تجسس کوخاطرمیں نہ لانے والے شیری مان نے اہلیہ کا مکمل تعارف تو نہیں کروایا تاہم اگلی انسٹاپوسٹ میں انہوں نے یہ ضرور واضح کردیا کہ اہلیہ سے ان کا رابطہ فیس بک پرہواتھا اور وہ اب انہیں ٹورنٹومیں مل گئی ہیں۔

View this post on Instagram A post shared by Sharry Mann (@sharrymaan)

اس پوسٹ میں پری زاد مان کی تصویرشیئرکرنے والے شیری مان نے یہ بھی کہا کہ اکیلے تصویرلگانے کی فرمائش ان کی اہلیہ کی جانب سے کی گئی تھی۔

بھارتی گلوکاروموسیقارکو انسٹاگرام پر 34 لاکھ سے زائد افراد فالو کرتے ہیں۔

مزید خبریں

Disclaimer: Urduwire.com is only the source of Urdu Meta News (type of Google News) and display news on “as it is” based from leading Urdu news web based sources. If you are a general user or webmaster, and want to know how it works? Read More