کراچی میں کے الیکٹرک کی من مانیاں، وزیراعظم کا نوٹس

بول نیوز  |  Aug 08, 2020

ایک جانب بارشیں اور دوسری جانب کراچی میں کے الیکٹرک کی من مانیاں جاری ہیں جس پر وزیراعظم عمران خان کی جانب سے نوٹس لے لیا گیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق کراچی میں کے الیکٹرک کی جانب سے جاری غیر اعلانیہ لوڈ شیڈنگ پر وزیر اعظم کی خصوصی ہدایت پر وفاقی وزیر عمر ایوب کراچی پہنچ گئے ہیں، شہزاد قاسم وزیر اعظم کے معاون خصوصی برائے پاور ڈیویزن بھی انکے ہمراہ ہیں۔

سی ای او کے الیکٹرک کو گورنر ہاوس طلب کرلیا گیا ہے جہاں عمر ایوب کل سی او کے الیکٹرک سے ملاقات کریں گے، حیسکو اور سیپکو حکام بھی ملاقات میں شریک ہوں گے۔

شہر قائد میں بارش، عوام بجلی سے محرومملاقات میں کراچی میں بجلی کے بحران بلخصوص بارشوں میں طویل بجلی بندش کرنٹ لگنے سے ہلاکتوں پر بات ہوگی۔

راچی میں بارشوں کے دوران کے الیکٹرک کے 1200 فیڈر ٹرپ کرگئے ہیں جس کے بعد شہر کا 60 فیصد سے زائد علاقہ تاریکی میں ڈوپ گیا ہے۔

شہر کے کئی علاقوں میں 12 گھنٹے سے بجلی غائب ہے جس میںلیاری ، کھارادر، صدر ، ناظم آباد کے علاقے شامل ہیں۔

پی آئی بی، شاہ فیصل ، لانڈھی، ملیر، نارتھ کراچی لیاقت آباد قیوم آباد سوسائٹی میں گزشتہ 8 گھنٹے سے لائٹ نہیں ہے جبکہ احسن آباد، گلشن معمار، بلدیہ سائٹ اورنگی ٹاؤن میں بھی بجلی بند ہے۔

بارشوں میں ہلاکتوں کا سلسلہدوسری جانب کراچی کی 2 دن کی بارشوں کے نتیجے میں متعدد افراد جاں بحق ہوگئے ہیں جن میں کرنٹ لگنے سے 5 افراد جبکہ 3 افراد کی ہکلاکت بارش کے پانی میں ڈوب کر ہوئی۔

بارش کے دوران  گزشتہ روز 2 افراد کرنٹ لگنے سے جاں بحق ہوئے کس میں گلستان جوہرمیں گھر میں کرنٹ لگنے سے ایک شخص جاں بحق ہوا ہے اورکٹی پہاڑی پر کرنٹ لگنے سے 13 سالہ بچہ کاشان جاں بحق ہوا۔

آج بارش میں میوہ شاہ قبرستان کے قریب کرنٹ لگنے سے ایک شخص جاں بحق ہوا، ملیر ماڈل کالونی میں بھی ایک شخص کرنٹ لگنے سے ہلاک ہوگیا جبکہ لانڈھی نمبر4 میں دکان کے شٹرسے کرنٹ لگنے سے ایک شخص جاں بحق ہوا ہے۔

دوسری جانب ایک بچہ سرجانی ندی میں ڈوب کر جاں بحق ہوا ہے جبکہ میٹرویل بنارس پل کے قریب 6 سالہ بچہ ندی میں ڈوب کر جاں بحق ہوگیا ہے۔

 یاد رہے کہ  کراچی میں میٹروپول کے قریب بل بورڈ گرنے سے 3 افراد زخمی ہوگئے تھے۔

مزید خبریں

Disclaimer: Urduwire.com is only the source of Urdu Meta News (type of Google News) and display news on “as it is” based from leading Urdu news web based sources. If you are a general user or webmaster, and want to know how it works? Read More