انڈیا: اشتہار سے دھیان بٹ گیا، یوٹیوب 75 لاکھ ہرجانہ ادا کرے، عدالت نےدرخواست گذار پر جرمانہ کر دیا

بی بی سی اردو  |  Dec 09, 2022

Getty Images

انڈیا کی سپریم کورٹ نے جمعہ کو یوٹیوب سے 75 لاکھ روپے کے معاوضے کا مطالبہ کرنے والے درخواست گزار پر 25 ہزار روپے کا جرمانہ عائد کیا ہے۔خبر رساں ایجنسی پی ٹی آئی کے مطابق سپریم کورٹ نے اس درخواست کو ’بے بنیاد‘ قرار دیتے ہوئے خارج کر دیا۔ریاست مدھیہ پردیش سے تعلق رکھنے والے اس شخص نے درخواست میں کہا تھا کہ یوٹیوب پر آنے والے اشتہارات سے ان کا دھیان بٹ جاتا تھا اور اسی وجہ سے وہ مقابلےکے امتحان پاس نہیں کرسکے۔

جسٹس ایس کے کول اور جسٹس اے ایس اوکا کی بنچ نے کہا، ’آپ معاوضہ مانگ رہے ہیں کیونکہ آپ نے انٹرنیٹ پر اشتہارات دیکھے اور اس سے آپ کا دھیان بٹ گیا اور امتحان پاس نہیں کر سکے؟‘

بنچ نے کہا، ’یہ آرٹیکل 32 کے تحت سب سے بے بنیاد درخواستوں میں سے ایک ہے اور ایسی درخواستیں صرف عدالت کا وقت ضائع کرتی ہیں‘۔

درخواست گزار نے سوشل میڈیا پر عریانیت پر پابندی کا بھی مطالبہ کیا تھا۔ بنچ نے پایا کہ درخواست گزار امتحان کی تیاری کے لیے یوٹیوب کا استعمال کر رہا تھا جہاں وہ فحش اشتہارات دیکھ رہا تھا۔ بنچ نے کہا کہ اگر آپ کو اشتہارات پسند نہیں ہیں تو انہیں نہ دیکھیں۔

اس سے قبل عدالت نے درخواست گزار پر ایک لاکھ جرمانہ عائد کیا تھا۔ بعد ازاں جب درخواست گزار نے جرمانہ ختم کرنے کا مطالبہ کیا تو عدالت نے اسے 25 ہزار روپے ادا کرنے کا کہا۔

مزید خبریں

Disclaimer: Urduwire.com is only the source of Urdu Meta News (type of Google News) and display news on “as it is” based from leading Urdu news web based sources. If you are a general user or webmaster, and want to know how it works? Read More